معین خان نے ڈومیسٹک پرفارمرز کیلئے آواز اٹھا دی

معین خان نے ڈومیسٹک پرفارمرز کیلئے آواز اٹھا دی
معین خان نے ڈومیسٹک پرفارمرز کیلئے آواز اٹھا دی
سورس:   Twitter

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان معین خان نے ڈومیسٹک پرفارمرز کیلئے آواز اٹھا دی ہے جن کا کہنا ہے کہ پرفارمنس کی بنیاد پر منتخب ہونے والے کھلاڑیوں کو مواقع بھی دینا ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق نجی خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے معین خان نے کہا کہ بابر اعظم کو پلیئنگ الیون کی سلیکشن کا اختیار دینے کی رپورٹس سامنے آئی ہیں جو اچھی بات ہے، ٹیم آپ خود بناکر دیں تو کپتان کو جوابدہ قرار نہیں دیا جا سکتا، بابر اعظم پرفارمر ہیں اور اب ان کیلئے موقع ہے کہ اتھارٹی کے ساتھ اپنی اہلیت منوائیں، امید ہے کہ وہ اس امتحان میں سرخرو ہوں گے اور ٹیم بھی بہتری کی جانب گامزن ہوگی،میں یہ بھی توقع کررہا ہوں کہ وہ کچھ وقفے سے میدان میں اترنے کے باوجود گزشتہ فارم برقرار رکھنے میں کامیاب ہوں گے۔

ایک سوال کے جواب میں سابق کپتان نے کہا کہ پروٹیز مضبوط حریف اور ڈٹ کر مقابلہ کرتے ہیں،پاکستان ٹیم کے پاس تجربہ کم مگر ہوم کنڈیشنز کا بھرپور فائدہ اٹھاتے ہوئے کامیابی حاصل کرنا چاہیے،بیٹنگ مضبوط ہے اگر باؤلنگ بھی چل جائے تو سیریز جیت سکتے ہیں، سازگار کنڈیشنز میں تجربہ کار یاسر شاہ کی باؤلنگ فارم واپس آ سکتی ہے،پچ سے ذرا سی بھی مدد ملی تو مہمان بیٹنگ لائن مشکل میں ہوگی، نیوزی لینڈ میں انہیں باہر بٹھاکر ظفر گوہر کو کھلانے کا فیصلہ غلط تھا۔

سابق وکٹ کیپر نے کہا کہ ڈومیسٹک پرفارمرز کو میرٹ پر منتخب کرنا درست اقدام ہے، سسٹم کی قدر کریں گے تو نئی نسل کو تحریک ملے گی، من پسند کھلاڑیوں کو شامل کرنے کی وجہ سے گزشتہ 10سال میں کئی آئے اور چلے گئے، بہرحال ٹاپ پرفارمرز کو لائے ہیں تو مواقع بھی دیں، دباؤ میں آ کر ایک میچ کے بعد باہر نہ کردیں۔

جنوبی افریقہ سے سیریز کے بعد ہیڈ کوچ مصباح الحق اور باؤلنگ کوچ وقار یونس کی کارکردگی کا ریویو اور دباؤ کے سوال پر معین خان نے کہا کہ دباؤ تو ہر کام میں ہوتا ہے، ظاہر سی بات ہے کہ پرفارمنس نہیں ہوتی تو تبدیلیاں کرنا پڑیں گی، تشکیل نو کے حوالے سے کوچز کا کوئی پلان سامنے نہیں آیا۔ 

مزید :

کھیل -