آسٹریا میں یکم فروری سے 55 ہزار افراد کو کورونا کی بوسٹر ڈوز لگوانا ہوگی

آسٹریا میں یکم فروری سے 55 ہزار افراد کو کورونا کی بوسٹر ڈوز لگوانا ہوگی
آسٹریا میں یکم فروری سے 55 ہزار افراد کو کورونا کی بوسٹر ڈوز لگوانا ہوگی

  

ویانا  (اکرم باجوہ) آسٹریا میں یکم فروری سے 55 ہزار افراد کو کورونا کی بوسٹر ڈوز لگوانا ہوگی جس کے باعث ایک بار پھر ویکسی نیشن سینٹرز پر عوامی رش کی توقع ہے ۔

 آسٹریا میں نصف ملین سے زیادہ لوگوں کے لیے کورونا ویکسینیشن سرٹیفکیٹ اگلے منگل  یکم فروری کو ختم ہو جائے گا۔ آسٹریا میں نصف ملین سے زائد افراد کے کورونا ویکسی نیشن سرٹیفکیٹس کی میعاد یکم فروری کو ختم ہونی ہے ۔

وزارت صحت پہلے ہی متاثرہ افراد کو سرٹیفکیٹ کی میعاد ختم ہونے کے بارے میں "گرین پاس" ایپ کے ذریعے آگاہ کر چکی ہے،  ویکسینیشن سرٹیفکیٹس کی درستگی کے ساتھ وفاقی حکومت ملک میں زیادہ سے زیادہ لوگوں کو بوسٹر ویکسین لگوانے پر آمادہ کرنا چاہتی ہے۔محکمہ صحت نے جمعرات کو رپورٹ کیا کہ دو ہفتے قبل تقریباً    نو لاکھ افراد کو کورونا سے بچاؤ کے دو ٹیکے لگوائے گئے تھے جن میں سے    تین لاکھ پچاس ہزار افراد کو بوسٹر ویکسینیشن مل چکی ہے۔

یکم فروری سے ساڑھے پانچ لاکھ افراد کے کورونا سرٹیفکیٹ کی میعاد ختم ہو جائے گی جبکہ تینوں ڈوز لگوانے والے افراد کا سرٹیفکیٹ مزید 9 تک کارآمد ہوگا۔

واضح رہے کہ آسٹریا میں   18 سال سے کم عمر کا ہر شخص کورونا سرٹیفکیٹ کی شرط سے مستثنیٰ ہے ۔  آسٹریا میں داخل ہونے پر ویکسینیشن سرٹیفکیٹ یا ویکسینیشن کے دیگر ثبوت 270 دنوں تک کارآمد رہتے ہیں۔

مزید :

کورونا وائرس -