مہنگے ترین شوروم کے عملے کا سادہ لوح کسان پر طنز، چند منٹوں میں ہی لاکھوں روپے تھما دئیے لیکن پھر ایسا کام کہ عملے کو ہی مانگنا پڑگئیں

مہنگے ترین شوروم کے عملے کا سادہ لوح کسان پر طنز، چند منٹوں میں ہی لاکھوں ...
مہنگے ترین شوروم کے عملے کا سادہ لوح کسان پر طنز، چند منٹوں میں ہی لاکھوں روپے تھما دئیے لیکن پھر ایسا کام کہ عملے کو ہی مانگنا پڑگئیں
سورس: Screengrab

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) کہتے ہیں کہ کسی کی ظاہری شکل و صورت سے اس کی حیثیت کا اندازہ نہیں لگانا چاہیے کہ کئی بار بظاہر سادہ کپڑوں میں ملبوس شخص بہت صاحب حیثیت بھی ہو سکتا ہے۔ ایسا ہی کچھ گزشتہ روز بھارتی ریاست کرناٹک کے شہر توماکورو میں پیش آیا جہاں ایک کسان عام سے لباس میں ملبوس گاڑی خریدنے کے لیے شوروم پہنچ گیا اور مختلف ماڈلز کی گاڑیاں دیکھنی شروع کر دیں۔ 

ویب سائٹ ’پڑھ لو‘ کے مطابق اس روز یہ کسان اپنے دوستوں کے ہمراہ محض گاڑی پسند کرنے گیا تھا، وہ ایک مہندرا شوروم میں گاڑیاں دیکھ رہا تھا کہ شوروم کے سیلز مین نے اسی ظاہری حالت دیکھ کر اس کے ساتھ بدتمیزی کر ڈالی۔ کسان کو وہاں ایک گاڑی پسند آئی، جس پر سیلز مین نے طنز کرتے ہوئے کہا کہ اس گاڑی کی قیمت 10لاکھ روپے ہے اور تمہاری جیب میں شاید 10روپے بھی نہ ہوں۔

کسان سیلز مین کا یہ طعنہ سن کر وہاں سے نکلا اور 30منٹ بعد 10لاکھ روپے کیش لے کر شوروم پر پہنچ گیا۔ اب کسان شوروم میں بضد تھا کہ چونکہ وہ کیش میں ادائیگی کر رہا ہے، لہٰذا اسے گاڑی کی ڈلیوری بھی ابھی کی جائے۔رپورٹ کے مطابق اس معاملے پر شوروم کے عملے اور کسان کے درمیان تلخ کلامی شروع ہو جاتی ہے۔ کسان گاڑی کی فوری ڈلیوری کے ساتھ عملے سے معافی مانگنے کا مطالبہ بھی کر رہا ہوتا ہے۔ کچھ دیر بعد وہاں پولیس آ جاتی ہے اور معاملہ رفع دفع کرا دیتی ہے۔ عملہ کسان سے معافی مانگ لیتا ہے اور فوری ڈلیوری نہ ملنے پر کسان گاڑی خریدنے سے انکار کر دیتا ہے اور رقم لے کر واپس چلا جاتا ہے۔اس واقعے کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر پوسٹ کی گئی ہے جو تیزی سے وائرل ہو رہی ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -بین الاقوامی -