گاڑیوں سے نکلنے والی آلودگی ،خیبرپختونخوا حکومت نے سب سے بڑا قدم اٹھا تے ہوئے نئی تاریخ رقم کردی

 گاڑیوں سے نکلنے والی آلودگی ،خیبرپختونخوا حکومت نے سب سے بڑا قدم اٹھا تے ...
 گاڑیوں سے نکلنے والی آلودگی ،خیبرپختونخوا حکومت نے سب سے بڑا قدم اٹھا تے ہوئے نئی تاریخ رقم کردی

  

پشاور(ڈیلی پاکستان آن لائن)تاریخ میں پہلی بار ڈائریکٹوریٹ آف ٹرانسپورٹ خیبرپختونخوا نے گاڑیوں سے نکلنے والی آلودگی کو چیک کرنے کیلئے قومی ماحولیاتی معیارات (NEQS)کو تبدیل کرکے عالمی معیار کے مطابق کر لیا ہے، یہ تاریخی تبدیلی وفاق سے 1994 ءمیں ملنے والے کوالٹی سٹینڈرڈز میں کی گئی ہے۔ 

اس حوالے سے آج ایک تفصیلی اعلامیہ ڈائریکٹوریٹ آف ٹرانسپورٹ خیبرپختونخوا نے جاری کیا ۔ ڈائریکٹر ٹرانسپورٹ فہد اکرام قاضی نے کہا ہے کہ اس ماحولیاتی معیارات کو عالمی معیار کے مطابق کرنے سے ماحولیاتی آلودگی کم کرنے میں مدد ملے گی،نئے قومی ماحولیاتی معیارات کے مطابق ڈیزل والی گاڑیوں میں سموگ لیول 40 فیصد سے کم کرکے 20 فیصد کم ازکم کیا گیاہے، پیٹرول اور سی این جی والی گاڑیوں میں کاربن مانو آکسائیڈ لیول زیادہ سے زیادہ 2.5 ہوگا ،پیٹرول کی گاڑیوں کیلئے کاربن ڈائی آکسائیڈ، ہائیڈرو کاربن وغیرہ کے لیول بھی شامل کئے گئے ہیں ۔

ڈائریکٹر ٹرانسپورٹ خیبرپختونخوا کا کہنا ہے کہ قومی ماحولیاتی معیارات پر پورا نہ اترنے والی خراب گاڑیوں کے خلاف کارروائی ہوگی،اب کچھ عرصے کے بعد خیبرپختونخوا کی سڑکوں پر صرف پالوشن فری گاڑیاں ہی چلیں گی، تبدیلی عالمی معیار اور صوبے میں سڑکوں اور گاڑیوں کی صورتحال کو دیکھتے ہوئے کی گئی ہے اور قومی ماحولیاتی معیارات کی تبدیلی کیلئے ویٹس(VETS) ماہرین سے مختلف گاڑیوں کی چیکنگ اور سروے کرایا گیا ہے ،اگلا ہفتہ نئے پیرامیٹرز اور معیارات سے آگاہی کے طور پر منایا جائے گا ،جس کے بعد گاڑیوں کی چیکنگ نئے سٹینڈرڈز کے مطابق کی جائے گی۔

ڈائریکٹر ٹرانسپورٹ خیبرپختونخوا نے مزید کہا کہ سیکرٹری ٹرانسپورٹ خیبرپختونخوا کی ہدایت پر گاڑیوں سے خارج ہونے والے دھوئیں اور ماحولیاتی آلودگی کی چیکنگ کے سٹیشن ویٹس نے صوبے کے تمام اضلاع میں ٹرانسپورٹرز، ڈرائیورز اور عام عوام میں ماحولیاتی آلودگی کے متعلق آگاہی اور شعور بیدار کرنے کیلئے ایک خصوصی مہم شروع کرنے کی ہدایت کی ہے، اس خصوصی مہم کے دوران صوبے کے مختلف اضلاع میں ٹرانسپورٹرز اور عوامی آگاہی کے لیے جگہ جگہ بینرز اور وال پیپر آویزاں کیے جائیں گے۔

مزید :

علاقائی -خیبرپختون خواہ -پشاور -