مجید نظامی نظریہ پاکستان کے تحفظ کےلئے عمر بھرمصروف جہاد رہے،پر وفیسر رشید احمد

مجید نظامی نظریہ پاکستان کے تحفظ کےلئے عمر بھرمصروف جہاد رہے،پر وفیسر رشید ...

لاہور (ایجوکیشن رپورٹر) ”مجید نظامی نظریہ پاکستان کے تحفظ کے لیے عمر بھرمصروف جہاد رہے اور قیام پاکستان کی رات یعنی 27 رمضان المبارک کو اپنے رب کے پاس لوٹ گئے ہیں“۔ان خیالات کا اظہار پرنسپل منصورہ ڈگری کالج پروفیسر رشید احمد انگوی نے مجید نظامی کی یاد میںبرپامحفل میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے مجید نظامی کو صحافت کے میدان میں سرگرم عمل عظیم نظریاتی جرنیل قرار دیا ممتاز صحافی اور کالم نگار پروفیسر محمد شفیق کھوکھر نے مجید نظامی کے جذبہ حب الوطنی کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے مرحوم کا قول یاد دلایا کہ”اگر ضرورت پڑے تو مجھے کسی بم یا میزائل کے ساتھ باندھ کر بھارت پر گرا دیا جائے“وہ عمر بھر بھارت کی پاکستان دشمن پالیسیوں کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے رہے اسلامی سکالر ڈاکٹر سعید اقبال قریشی نے تحریک پاکستان اور نظریاتی جدوجہد میں نظامی برادران کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا حیاتیات کے سینئر پروفیسر محمد ثقلین اقبال نے پاکستان میں جمہوریت کی ترقی کے لئے مجید نظامی کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا ممتاز دانشور عشرت بخاری نے یہ انکشاف کیا کہ محترمہ فاطمہ جناح کو ”مادرِ ملت “کا خطاب مجید نظامی نے ہی دیا تھا اس موقع پر مجید نظامی کی روح کو ایصال ثواب کے لیے فاتحہ خوانی کی گئی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4