کیا ISIS نے واقعی بینک لوٹا؟

کیا ISIS نے واقعی بینک لوٹا؟
کیا ISIS نے واقعی بینک لوٹا؟

  


موصل (نیوز ڈیسک) داعش (ISIS) کی مشرق وسطیٰ میں مہم جوئی نے دنیا بھر میں تھرتھلی مچائی ہوئی ہے۔ یہ اپنی پر تشدد کارروائیوں سے تو جانی ہی جاتی ہے لیکن کئی کہانیاں ایسی بھی ہیں جو کہ محض افسانے ہی ہیں، ISIS کے موصل پر قبضے کے بعد دنیا بھر کے اخبارات میں خبریں شائع ہوئیں کہ شہر کے مرکزی بینک سے شدت پسند تنظیم نے 40 کروڑ ڈالر سے زائد رقم لوٹ لی۔ اس کے بعد عالمی میڈیا نے اسے دنیا کا امیر ترین شدت پسند ملک بھی قرار دے دیا۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ اب ایسے معلوم ہوتا ہے جیسے یہ واقعہ شاید پیش ہی نہیں آیا۔ اس واقعہ کی خبر دینے والے گورنر کا لہجہ ”فنانشک ٹائمز“ کو دئیے گئے حالیہ انٹرویو میں ذرا بدلا بدلا نظر آتا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ابھی تک کسی نے اس خبر کی تصدیق نہیں کی۔ دوسری جانب عراقی بجی بینکوں کی ایسوسی ایشن کے چیف ایگزیکٹو کا کہنا ہے کہ اس قسم کا کوئی واقعہ پیش ہی نہیں آیا اور موصل میں بینک کی بلڈنگ سے اب تک کاغذ کا ایک ٹکڑا بھی نہیں نکالا گیا۔ ان بیانات کے بعد اس خبر کی صداقت کے بارے میں شکوک و شبہات پیدا ہوچکے ہیں۔

مزید : بین الاقوامی