قراقرم ہائی وے فیز ، ٹو کراچی موٹر وے کیلئے آلات اور میٹریل پر کسٹم ڈیوٹیز ، ٹیکس ختم

قراقرم ہائی وے فیز ، ٹو کراچی موٹر وے کیلئے آلات اور میٹریل پر کسٹم ڈیوٹیز ، ...

  

 اسلام آباد (صباح نیوز) وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی صدارت میں کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس منگل کے روز وزیر اعظم آفس اسلام آباد میں ہوا کمیٹی نے وزارت مواصلات کی تجویز پر غورکرتے ہوئے پاک چین اقتصادی راہداری کے تحت قراقرم ہائی وے فیز ٹو (تھاکوٹ تا حویلیاں سیکشن) اور کراچی لاہور موٹروے (سکھر تا ملتان سیکشن) کی تکمیل کے لیے آلات اور تعمیراتی میٹریل کی درآمد پر کسٹم ڈیوٹیز اور لیویز سمیت دوسرے متعلقہ ٹیکس ختم کرنے کی منظوری دی فنانس ڈویژن کی تجویز پر اقتصادی رابطہ کمیٹی نے 27.2ملین ڈالر ترسیلات زر کی منظور دی اس رقم سے یو اے ای میں بینک الفلاح کی برانچ کھولی جائے گی تجویز کے مطابق اس سرمایہ کاری سے متحدہ عرب امارات میں پاکستانی شہریوں کے لییروزگار کے مواقع پیدا ہوں گے جسکی حکومت پاکستان کو ضرورت ہے کمیٹی نے وزارت نیشنل فوڈ سیکورٹی اینڈ ریسرچ کی طرف سے برآمد کنندگان کے لیے اضافی گندم اور آٹے کی برآمد پر فی ٹن 30ڈالر اضافی ریبیٹ کا بھی جائزہ لیا تا کہ برآمد کنندگان کو مسابقتی نرخ حاصل ہو سکیں اس سے پہلے ای سی سی 55سے 45ڈالر کے ریبیٹ پنجاب اور سندھ کے لیے دے چکی ہے جبکہ دونوں صوبوں کی حکومتیں بھی 35سے 45ڈالر فی ٹن ریبیٹ میں حصہ ڈال رہی ہیں تازہ تجویز پر یہ فیصلہ کیا گیا کہ برآمد کرنے کی اجازت 30نومبر سے ہو گی اور برآمد کے عمل کو 31جنوری 2017تک مکمل کر لیا جائے گا جبکہ اس شرط پر تجویز کی منظوری دی گئی کہ 30ڈالر فی ٹن کا اضافی ریبیٹ میں وفاقی اور صوبائی حکومتیں حصہ دار ہوں گی۔

مزید :

علاقائی -