اپنے دور میں صوبے کی ترقی کیلئے اقدامات کیے: وزیر اعلیٰ سندھ

اپنے دور میں صوبے کی ترقی کیلئے اقدامات کیے: وزیر اعلیٰ سندھ

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر) وزیراعلی سندھ سید قائم علی شاہ نے کہاہے کہ پارٹی قیادت نے مسند سے ہٹانے کا جو فیصلہ کیا وہ من و عن تسلیم کرتے ہیں جب کہ اپنے دور حکومت میں کوشش کی کہ سندھ میں ترقی کے لئے اقدامات کئے جائیں،وزیراعلیٰ سندھ نے لیاقت نیشنل اسپتال میں لنکن کارنرلائبریری کا فیتہ افتتاح سے قبل ہی کاٹ دیا۔وہ منگل کو ایم کیو ایم کے رہنما اورسندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف خواجہ اظہار سے والد کے انتقال پر اظہار تعزیت اورلیاقت میموریل لائبری میں امریکی لائبریری کے افتتاح کے موقع پر میڈیا سے بات چیت کررہے تھے ۔وزیراعلی سید قائم علی شاہ نے کہاکہ جتنی بھی ناراضگی ہو بات چیت سے مسئلے حل ہوتے ہیں تاہم انہیں مسند سے ہٹانے کا جو فیصلہ پارٹی قیادت نے کیا وہ من و عن تسلیم کرتے ہیں اور اس حوالے سے پارٹی میں تضادات کی اطلاعات میں کوئی صداقت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم سب ایک ہیں اور پارٹی قیادت جو فیصلہ کرتی ہے اسے تسلیم کیا جاتا ہے، پارٹی کارکن ہوں اور اب آئندہ پارٹی کارکن رہ کر کام کروں گا۔وزیراعلی سندھ سے جب 8 سالہ کارکردگی سے متعلق سوال کیا گیا تو انہوں نے کہاکہ ہم نے اپنے دور حکومت میں کوشش کی کہ سندھ میں ترقی کے لئے اقدامات کئے جائیں اور سندھ حکومت نے صحت اور روزگار کے شعبوں میں کافی کام کیا۔اس سے قبل لیاقت میموریل لائبری میں منعقدہ تقریب کے موقع پر صحافیوں سے بات کرتے ہوئے قائم علی شاہ نے کہا کہ سندھ میں تبدیلی کا فیصلہ عوام کی بہتری اور ترقی کے لئے ہوگا، ساتھ ساتھ شاہ جی نے اس کا اظہار مشہور شعر کے ایک مصرعے کی شکل میں کیا۔ سرتسلیم خم ہے جو مزاج یار میں آئے۔شاہ جی کسی نہ کسی تقریب میں کچھ ایسا ضرور کرتے ہیں جو لوگوں کو ہنسنے پر مجبور کردیتا ہے اورایسا ہی اس تقریب میں بھی ہوا جب قائم علی شاہ سے فیتہ کٹوایا گیا اوراس کے لئے ابھی کاؤنٹ ڈان جاری تھا کہ انہوں نے پہلے ہی فیتہ کاٹ دیا اور فیتہ کٹتے ہی انہوں نے اسے زور سے پکڑے رکھا اور جب گنتی ختم ہوئی تو انہوں نے فیتہ چھوڑ کر یہ تاثر دینے کی کوشش کی کہ انہوں نے ابھی ہی فیتہ کاٹا ہے۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -