بھارت کا لاہور کے رہنے والے لشکر طیبہ کے کمانڈر بہادر علی عرف سیف اللہ کوگرفتار کرنے کا دعوی ،مودی حکومت مقبوضہ کشمیر میں قابض فوج کے ظلم و بر بریت چھپانے کے لئے اوچھے ہتھکنڈوں پر اتر آئی

بھارت کا لاہور کے رہنے والے لشکر طیبہ کے کمانڈر بہادر علی عرف سیف اللہ ...
بھارت کا لاہور کے رہنے والے لشکر طیبہ کے کمانڈر بہادر علی عرف سیف اللہ کوگرفتار کرنے کا دعوی ،مودی حکومت مقبوضہ کشمیر میں قابض فوج کے ظلم و بر بریت چھپانے کے لئے اوچھے ہتھکنڈوں پر اتر آئی

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک )مودی حکومت مقبوضہ کشمیر میں قابض فوج کی نہتے کشمیریوں پر کی جانے والی بربریت کا بھیانک چہرہ چھپانے اور پاکستان پر نام نہاد دباؤ بڑھانے کے لئے من گھڑت اور فرضی کہانیاں گھڑنے کے لئے متحرک ہو گئی۔بھارتی وزیر مملکت کرن راجیو نے دعوی کیا ہے کہ سری نگر سے سیکیورٹی اداروں نے لاہور کے رہنے والے شہری اور لشکر طیبہ کے کمانڈر بہادر علی عرف سیف اللہ کو زندہ گرفتار کر لیا ہے جو موجودہ صورتحال میں بھارت کے لئے بہت بڑی کامیابی ہے ۔

ہندوستانی نجی چینل ’’این ڈی ٹی وی ‘‘ کے مطابق مقبوضہ وادی کے ضلع کپواڑہ میں سیکیورٹی فورسز کے ساتھ ہونے والی جھڑپ میں 4مجاہد شہید ہو گئے جبکہ بہادر علی عرف سیف اللہ زندہ پکڑا گیا ،بھارتی ٹی وی کے مطابق سیف اللہ کا کہنا تھا کہ اس کا تعلق لشکر طیبہ سے ہے اور وہ لاہور کا رہنے والا ہے اور وہ اپنے 4ساتھیوں کے ہمراہ مقبوضہ وادی میں بھارتی فوج پر حملوں کے لئے آیا تھا ۔ودسری طرف بھارت کی نیشنل انوسٹی گیشن ایجنسی (این آئی اے)ٹیم سیف اللہ کو حراست میں لینے کے لئے سری نگر پہنچ گئی ہے ،این آئی اے ٹیم بہادر علی عرف سیف اللہ کو گرفتار کر کے مزید تحقیقات کے لئے دہلی لے کر آ رہی ہے ۔کرن راجیو کا کہنا تھا کہ مقبوضہ وادی میں پاکستان کشیدگی کو ہوا دے رہا ہے ،سیف اللہ کی گرفتاری سے بھارتی دعوی کو مزید تقویت حاصل ہوئی ہے ۔انہوں نے دعوی کیا کہ سیف اللہ سے گرفتاری کے وقت 3اے کے 47رائفل ، 2پسٹل ،وائرلیس سیٹ ،میٹرک کوڈ اور 23ہزار روپے برآمد ہوئے ہیں۔واضح رہے کہ معروف کشمیری مجاہد برہان مظفر وانی کی بھارتی فوج کے ہاتھوں شہادت کے بعد پورے مقبوضہ کشمیر میں صورتحال کشیدہ ہے اور برہان وانی کی شہادت کے بعد سے لیکر اب تک 60سے زائد کشمیری شہید اور 4ہزار سے زائد زخمی ہو چکے ہیں ،جبکہ پوری دنیا میں بھارتی جارحیت کے خلاف احتجاج ہو رہا ہے،بھارتی حکومت اپنے ظلم اور بر بریت کو چھپانے کے لئے اس طرح کے اوچھے ہتھکنڈے پہلے بھی استعمال کرتی رہتی ہے ۔

مزید :

بین الاقوامی -