سندھ پولیس کے 12ہزار سے زائد اہلکاروں کا ریکارڈ مشکوک نکلا

سندھ پولیس کے 12ہزار سے زائد اہلکاروں کا ریکارڈ مشکوک نکلا

کراچی (اے این این) محکمہ انسداد دہشتگردی سندھ کی رپورٹ میں سندھ پولیس کے 12 ہزار سے زائد پولیس اہلکاروں کا ریکارڈ مشتبہ ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں مجرمانہ سرگرمیوں میں ملوث پولیس افسران واہلکاروں کے خلاف کارروائی سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی جس میں ایڈیشنل آئی جی محکمہ انسداد دہشت گردی(سی ٹی ڈی)ثنااللہ عباسی کی سربراہی میں ہونے والی تفتیش کی انکوائری رپورٹ پیش کی گئی۔سی ٹی ڈی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ سندھ پولیس کے 12 ہزار سے زائد پولیس اہلکاروں کا ریکارڈ مشکوک ہے۔اس موقع پر جسٹس سجاد علی شاہ نے ایڈووکیٹ جنرل سے استفسار کیا کہ یہ بتائیں اعلی افسران کے خلاف کارروائی کیوں نہیں ہورہی؟ یہ نہیں چلے گا کہ صرف چھوٹے افسران کے خلاف کارروائی کی جائے۔جسٹس سجاد علی شاہ کا کہنا تھا کہ کیا ہمیں نہیں معلوم کہ سندھ پولیس میں کیا کھینچا تانی چل رہی ہے۔عدالت نے دوران سماعت چیف سیکریٹری سندھ کو بھی فوری طور پر عدالت میں طلب کرلیا۔

ریکارڈ مشکوک

مزید : کراچی صفحہ اول