سی پیک میں سوئٹزر لینڈ کی پاکستان میں بڑھتی ہوئی سرمایہ کاری

سی پیک میں سوئٹزر لینڈ کی پاکستان میں بڑھتی ہوئی سرمایہ کاری

کراچی (اسٹاف رپورٹر)پاکستان ایک بار پھر ملکی و غیرملکی سرمایہ کاروں کے لئے ابھرتی ہوئی مارکیٹ کی حیثیت اختیار کرکے ان کی توجہ حاصل کررہا ہے۔ 5 فیصد سے زائد جی ڈی پی کی ترقی، بڑھتا ہوا درمیانہ طبقہ، ملک میں فعال جمہوری ادارے اور ملکی سلامتی کی بہتر ہوتی ہوئی صورتحال، صارفین کی مارکیٹ میں یہ سب مثبت اقتصادی انڈیکیٹرز ہیں۔چین پاکستان اقتصادی راہداری (CPEC) نے ملک کے اقتصادی افق کو مزید روشن کردیا ہے، جس کے مثبت اثرات اب زمینی حقائق کی صورت میں سامنے آرہے ہیں۔چین پاکستان اقتصادی راہداری ایک مثبت ترقی ہے جس کے آغاز سے ہی عالمی سرمایہ کاروں نے اسے تسلیم کیا ہے کہ یہ تمام سرمایہ کاروں کے لئے اچھی قدر ہے، جس سے انہیں زبردست کاروباری فوائد ملیں گے۔ یہ اس ابتدائی خیال کے بر عکس ہے کہ CPEC چین و پاکستان کے درمیان ہی گھومے گاجو شاید پاکستان کو عالمی سرمایہ کاروں کی نظروں سے دور کردے۔سوئس بزنس کونسل (ایس بی سی) پاکستان نے پاکستان میں سوئس سفارت خانے ، قونصل خانے اور سوئٹزر لینڈ کے کاروباری اتحادیوں کے تعاون سے عالمی سرمایہ کاروں کو ان مثبت پیش رفتوں اور خاص طور پر CPEC کو عالمی قدر کے حامل ایک منصوبے کے طور پر مارکیٹ کرنے کے منصوبے میں پہل کی۔اس موقع پر مارچ اور اپریل 2017 ء کے مہینوں میں اسلام آباد اور کراچی میں اس مقصد کے لئے منعقد ہونے والی ایس بی سی کی سرمایہ کاری کی تقریبات ہوئیں، جن میں بڑے پیمانے پر سفیروں، غیر ملکی مشنوں، تجارتی رہنماؤں اور ذرائع ابلاغ کے کمرشل کونسلرز نے حصہ لیا۔پاکستان میں بنیادی کام کے بعد، 2017 ء کے آغاز میں ہی ایس بی سی پاکستان کے ایک وفد نے سوئس سرمایہ کاروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کی دعوت دی اور پاکستان اور سوئٹرز لینڈ کے درمیان دو طرفہ تجارت کو بڑھانے کے لئے سوئٹرز لینڈ کا دورہ کیا، جس کو CPEC سے خاص مدد ملے گی۔سوئٹزر لینڈ میں ایس بی سی کے کاروباری شراکت داروں ، خاص طور پر سوئٹزر لینڈ گلوبل انٹر پرائز (S-GE) کی 4 جولائی کو Lucerne کے قریب ہونے والی تقریب اورسوئس ایشین چیبر آف کامرس(SACC) اور ایشیا سوسائٹی سوئٹزرلینڈ (ASS) کی 5 جولائی کو زیوریخ میں منعقدہ تقریب میں پاکستا ن اور خطے میں بدلنے والی کاروباری اور سیاسی صورتحال پر بات چیت ہوئی جس میں CPEC کے تحت سرمایہ کاروں کی ویلیو میں اضافے ، بہترین سڑکوں اور ریل نیٹ ورک کے ذریعے بہتر علاقائی رابطوں، توانائی کی بڑھتی ہوئی بہتر صورتحال اور ملک بھر میں 30 سے زائد خصوصی اقتصادی زون نیز 35 بلین ڈالرز کی سرمایہ کاری کے ذریعے غیر معمولی مارکیٹوں تک رسائی حاصل کرنے کو نمایاں کیا گیا۔ سوئٹزر لینڈ میں ہونے والی ان تمام تقاریب میں کاروباری رہنماؤں، بینکوں ، سوئس کاروباری چیمبرز اور رائے سازوں نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔ان تقاریب میں CPEC کے موضوع پربزنس لیڈرز کی ایک بڑی تعداد خصوصاً نیسلے پاکستان، سیکا، ایس اے سی سی، اے ایس ایس، ایس بی سی سمیت پاکستان میں سوئٹزر لینڈ کے سفیر اور کراچی کے قونصل خانے نے پینل گفتگو میں حصہ لیا۔ فیڈرل سیکریٹریٹ آف اکنامک افیئرز (SECO) کے برن میں منعقدہ ایک اجلاس میں سوئٹزر لینڈ کی پاکستان میں سفیر Livia Leu نے CPEC منصوبے کی افادیت پر تبادلہ خیال کیا جس میں اس کی خاص خصوصیات پیش کی گئیں۔ SECO سوئٹرز لینڈ کی ایک وزارت ہے جو ملک میں اقتصادی معاملات کی ذمہ دار ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر