ڈی ایس پی جہانیاں نے قتل کے نامزد ملزم رہا کردیئے، احتجاج

ڈی ایس پی جہانیاں نے قتل کے نامزد ملزم رہا کردیئے، احتجاج

ملتان (سٹی رپورٹر)بستی بشیر آباد بہاولپور روڈ ملتان کی رہائشی والدہ محمد اجمل نثاراں بی بی اور چچی سلمیٰ بی بی نے ظلم کی داستان سناتے ہوئے بتایا کہ مورخہ1-7-2017ء کو اس(بقیہ نمبر4صفحہ12پر )

کے بیٹے محمد اجمل اور بہو نورین بی بی کو محمد اجمل کے سالے امجد ودیگر ملزمان نے گولی مار کر قتل کردیا تھا جس کا مقدمہ نمبر124/17تھانہ ٹھٹہ صادق آباد کھوہ کرپے والا موضع علی شیر وان میں درج ہے بوڑھی ماں نے مزید بتایا کہ پولیس افسر تفتیشی فلک شیر ایس آ ئی اور ڈی ایس پی جہانیاں کیوان کریم عباس نے ملزمان سے ساز باز کر کے قتل میں ملوث ایف آ ئی آ ر میں نامزد ملزمان جو کہ ملزم امجد کا والد یوسف‘بھائی ساجد‘چچا زاد بھائی مبارک کو غیر منصفانہ تفتیش کر کے چھوڑ دیا اور محمد یوسف جو کہ وقوعہ کے روز سے گرفتار تھا کو رہا کردیا۔اب مبارک اور ساجد کو بھی فارغ کر نے کے درپے ہیں‘قتل ہونے والے محمد اجمل کی بوڑھی ماں نے اس کی یتیم معصوم بچیوں جن کی عمر مسکان اڑھائی سال‘خدیجہ6ماہ کے ہمراہ آئی جی پنجاب‘آ ر پی او ملتان‘ڈی پی او خانیوال‘وزیراعلیٰ پنجاب‘چیف جسٹس آف پاکستان سے درمندانہ اپیل کی ہے کہ میرے بیٹے اور بہو کے قاتلوں کو فوری گرفتار کر کے کڑی سزا دی جائے اور قتل کی تفتیش کسی ایماندار پولیس افسر سے کرائی جائے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر