ڈسٹرکٹ جیل میں قیدی کی تشدد سے ہلاکت ثابت، چیف چکر سمیت 8وارڈر معطل

ڈسٹرکٹ جیل میں قیدی کی تشدد سے ہلاکت ثابت، چیف چکر سمیت 8وارڈر معطل

ملتان (وقائع نگار) ڈسٹرکٹ جیل ملتان میں منشیات کے مقدمہ میں ملوث قیدی کی تشدد سے ہلاکت ثابت ہونے پر چیف چکر (بقیہ نمبر21صفحہ12پر )

سمیت 8جیل وارڈرز کو معطل کردیا گیا جبکہ ڈپٹی سپرٹینڈنٹ کیخلاف کارروائی کیلئے ہوم ڈیپارٹمنٹ کو لیٹر لکھ دیا گیا ہے۔ تفصیل کے مطابق ڈسٹرکٹ جیل ملتان میں چند روز قبل منشیات کے مقدمہ کا قیدی عبدالرحیم رشید جیل عملہ کے تشدد سے ہلاک ہوا گیا تھا جس پر قائمقام آئی جی جیل خانہ جات پنجاب سالک جلال نے ایک انکوائری ٹیم تشکیل دی جنہوں نے ایک روز قبل ڈسٹرکٹ جیل ملتان کا معائنہ کیا اور جیل میں موجود قیدیوں، حوالاتیوں اور جیل عملہ کے بیانات ریکارڈ کیئے بیانات سے ثابت ہوگیا کہ قیدی عبدالرحیم رشید کی ہلاکت تشدد سے ہوئی سہے جس پر قائمقام آئی جی جیل خانہ جات پنجاب سالک جلال نے چکر چیف اسلم گرمانی ، انچارج اشرف، ہیڈ وارڈر ارشد، سلیم، اشرف پٹھان، بشیر سمیت 8اہلکاروں کو معطل کر کے انکے خلاف محکمانہ کارروائی شروع کردی ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ معطل ہونے والے جیل ملازمین نے انکوائری کمیٹی کو اپنا بیان ریکارڈ کرواتے ہوئے کہا ہے کہ انہوں نے ڈپٹی سپریٹنڈنٹ رضوان سعید کے حکم پر قیدی کو تشدد کا نشانہ بنایا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر