پاکستان مظلوم کشمیری عوام کی حمایت جاری رکھے گا، دہشت گردی کے خلاف جنگ پر استطاعت سے بڑھ کر خرچ کئے، افغان میڈیا میں بیرونی عناصر پاکستان مخالف پروپیگنڈہ کرتے ہیں: نفیس ذکریا

پاکستان مظلوم کشمیری عوام کی حمایت جاری رکھے گا، دہشت گردی کے خلاف جنگ پر ...
پاکستان مظلوم کشمیری عوام کی حمایت جاری رکھے گا، دہشت گردی کے خلاف جنگ پر استطاعت سے بڑھ کر خرچ کئے، افغان میڈیا میں بیرونی عناصر پاکستان مخالف پروپیگنڈہ کرتے ہیں: نفیس ذکریا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)ترجمان دفتر خارجہ نفیس زکریا نے کہا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں انسانیت سوز مظالم کر رہا ہے، پاکستان مظلوم کشمیریوں کی اخلاقی ، سیاسی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا۔پاکستان انسداد دہشت گردی آپریشنز پر استطاعت سے زیادہ خرچ کر رہا ہے، پاکستان نے انسداد دہشتگردی کے لیے بے پناہ قربانیاں دی ہیں، پاکستانی کوششوں کو امریکا سمیت عالمی برادری نے بھی سراہا ہے، افغان میڈیا میں بیرونی عناصر پاکستان مخالف پروپیگنڈہ کرتے ہیں۔

پاناما کیس کا فیصلہ آتے ہی وزارت اور اسمبلی رکنیت سے مستعفیٰ ہو جاﺅں گا :چوہدری نثار

اسلام آباد میں ہفتہ وار پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ترجمان دفتر خارجہ نفیس ذکریا کا کہنا تھا کہ بھارت، پاکستان میں دہشت گردی کی معاونت کر رہا ہے، جبکہ نئی دہلی کشمیری حریت رہنماوں کو نظربند کرکے مقبوضہ کشمیر کی مقامی تحریک کو دہشتگردی سے منسلک کرنے کی ناکام کوشش کر رہا ہے، یہ تحریک کشمیریوں کی اپنی اور نوجوان نسل کو ان کے بزرگوں سے ورثہ میں ملی ہے۔ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم میں اضافہ ہوا ہے، 18 ہزار سے زائد کشمیری جبری طور پر لاپتہ ہیں، بھارت کی جانب سے آبروریزی کو ایک ہتھیار کے طور پر استعمال کیا جا رہا، بھارت کی جانب سے اقلیتوں مسلمانوں, مسیحیوں اور دلتوں کے خلاف مظالم میں اضافہ ہوا ہے اور انہوں نے مطالبہ کیا کہ بین الاقوامی برادری کو اس کا نوٹس لینا چاہیے۔ پاکستان نے پیلٹ گنز کا شکار کشمیریوں کا یورپی ممالک میں علاج کرانے کی پیشکش کی تھی، جس پر بھارت نے انکار کیا، انہوں نے کہا کہ پیشکش اب بھی موجود ہے۔ بھارت سمجھوتہ ایکسپریس میں ملوث کرنل پروہت اور دیگر کو تحفظ دے رہا ہے، بھارت آسیم آنند کرنل پروہت اور دیگر کے بارے میں تحقیقات پر اثر انداز ہوا ہے اور اس حوالے سے تحقیقات کے بارے میں آگاہ نہیں کیا گیا۔

پاناما کیس ،انتظار کی گھڑیاں ختم ،سپریم کورٹ نے کل وزیراعظم کی قسمت کا فیصلہ سنانے کا اعلان کر دیا

نفیس ذکریا کا مزید کہنا تھا کہ افغان سیکورٹی فورسز کی جانب سے آپریشن کے دوران بحفاظت بازیاب کئے گئے دو پاکستانی سفارتکار جمعرات کو اسلام آباد پہنچ گئے۔جلال آباد میں پاکستانی قونصلیٹ جنرل کے دو سفارتکاروں کو کچھ عرصہ قبل نامعلوم افراد نے اغوا کیا تھا۔ افغان سیکورٹی فروسز نے بدھ کوآپریشن کے دوران دونوں سفارتکاروں کو بحفاظت بازیاب کیا تھا۔افغانستان کے صدر اشرف غنی نے کابل میں پاکستان کے ناظم الامور کو ذاتی طور پر فون کیا اور اور بتایا کہ افغان سیکورٹی فورسز نے آپریشن کر کے سفارتکاروں کو بازیاب کرایا ہے۔بدھ کو افغان وزارت خارجہ امور نے دونوں سفارتکاروں کو کابل میں پاکستانی سفارتخانے کے حوالے کیا تھا۔دونوں سفارتکاروں اور انکے اہلخانہ نے بحفاظت بازیابی کیلئے کوششوں پر افغان حکومت کا شکریہ ادا کیا ہے۔انہوں نے رہائی کیلئے مسلسل کاوشیں کرنے پر افغان حکومت کا بھی شکریہ ادا کیا ہے۔

”آ جاﺅ فخر زمان“ فخر پاکستان کو بڑی خوشخبری مل گئی، ایک ایسی لیگ کھیلنے کیلئے بلا لیا گیا کہ جان کر ہی پاکستانی خوشی سے نہال ہو جائیں گے، پی سی بی نے بھی نوجوان بلے باز کو خوش کر دیا

ترجمان دفتر خارجہ نے آپریشن ضرب عضب ردالفساد اور خیبر فور کے حوالے سے کہا کہ یہ پاکستانی عزم کے عکاس ہیں، پاکستان الزام تراشیوں پر یقین نہیں رکھتا، الزام تراشیوں کا سلسلہ قیامِ امن اور انسداد دہشتگردی کی کوششوں کے لیے نقصان دہ ہے انہوں نے کہا کہ امریکہ کے ساتھ تعاون انسداد دہشت گردی حکمت عملی کا حصہ ہے۔ ملک میں کسی تفریق کے بغیر دہشتگردی کے خلاف کارروائیاں جاری ہیں۔ ترجمان نے یاددلایا کہ پاکستان نے دہشت گردی کے خاتمے کی کارروائیوں میں بڑے پیمانے پر اخراجات کئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ کی طرف سے روکے گئے پینتیس کروڑ ڈالر امداد نہیں تھی۔وہ دہشت گردی کے خلاف اخراجات کی مد میں ادا کئے جانے تھے۔امریکہ میں افغانستان کے سفیر کے پاک فوج کے خلاف بیان سے متعلق سوال پر ترجمان نے کہا کہ پاک فوج نے خود کو خطے میں دہشت گردی کے خلاف سب سے موثر انداز میں کارروائی کرنے والی فوج ثابت کیا ہے اور ہر سطح پر پاک فوج نے گرانقدر قربانیاں دیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان نہ صرف دہشتگردی کے خلاف لڑ رہا ہے بلکہ یہ جنگ جیت بھی رہا ہے۔ در حقیقت سرحد پار افغانستان میں ایک بڑے حصے پر شدت پسندوں کا قبضہ ہے جس سے نہ صرف پاکستان بلکہ پورے خطے کوخطرہ لاحق ہے۔ افغان ذرائع ابلاغ پر پاکستان کے خلاف بے بنیاد پروپیگنڈا مہم پر بھی افسوس ظاہر کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان تعلیم کے شعبے میں ہمسایہ ملک سے غیرمعمولی تعاون کر رہا ہے۔

مزید : قومی /اہم خبریں