اپوزیشن ایف اے ٹی ایف کیساتھ نیب کا بل بھی منظور کروانا چاہتی ہے: شبلی فراز

اپوزیشن ایف اے ٹی ایف کیساتھ نیب کا بل بھی منظور کروانا چاہتی ہے: شبلی فراز

  

اسلام آباد (این این آئی)وفاقی وزیر اطلاعات سینیٹر شبلی فراز نے کہا ہے کہ ایف اے ٹی ایف کے بل کی منظوری کے ساتھ اپوزیشن نیب کا بل بھی منظور کروانا چاہتی ہے۔ایک انٹرویومیں وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ نیب قوانین سے متعلق اپوزیشن صرف اپنے لیے بات کررہی ہے تاکہ بچت کا راستہ نکل سکے۔وزیر اطلاعات نے کہاکہ میں خود کمیٹی کا ممبر ہوں جس میں اپوزیشن جماعتوں کے اراکین نے ایف اے ٹی ایف بل کی منظوری کے لیے نیب بل کی شرط رکھی۔ اسلام آباد میں تانیہ ایدروس اور ڈاکٹر فیصل سلطان کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے شبلی فراز نے کہا کہ ہمیں بھارت سے لڑنیکی ضرورت نہیں، اپوزیشن ہی کافی ہے کیونکہ اْس نے ہمارے اداروں کو اندرونی طور پر تباہ کیا۔بلاول بھٹو جو سوالات ہم سے کر رہے ہیں وہ اپنے والد سے ہی پوچھ لیں، وہ زرداری سے پوچھیں سرے محل کس کا تھا،جعلی اکاؤنٹس کی کیاکہانی ہے، پاکستان میں مسٹرٹین پرسنٹ کس کو کہا جاتا تھا، پیپلزپارٹی کے چیئرمین ان باتوں کا جواب بھی قوم کو دیں کیونکہ عمران خان اپنی پوری منی ٹریل سپریم کورٹ میں پیش کرچکے ہیں اور عدالت نے ہی انہیں صادق و امین قرار دیا۔شبلی فراز نے کہا کہ افسوس اب پیپلزپارٹی آصف زرداری کی جماعت ہوگئی ہے، قمرزمان کائرہ اور چوہدری منظورجیسے نظریاتی لوگ آج بھی بھٹو کے نظرئیے اور ویژن پر چل رہے ہیں،ان دو جماعتوں (مسلم لیگ ن اورپیپلزپارٹی) نے مک مکا کر کے ایک دوسرے پر مقدمات بنوائے۔ انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس پر قابو پانے پر دنیا بھر میں ہماری پذیرائی ہو رہی ہے لیکن مخالفین میں اتنی شرم نہیں کہ حکومتی فیصلے کو سراہتے۔اللہ کا شکر ہے کہ محدود وسائل کے باوجود ہم وبا کو کنٹرول کرنے کی پوزیشن میں ہیں۔ہم نے اسمارٹ لاک ڈاؤن تجویز کیا جس پر ہمیں فخر ہے۔معاونین خصوصی نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ تمام فیصلوں اور اقدامات میں ڈیٹا کا کردار انتہائی بنیادی اہمیت کا حامل تھا۔ تمام وفاقی ادارے، صوبائی حکومتیں، سرکاری اور نجی اداروں کے ساتھ ساتھ جس طرح عوام نے مل کر کام کیا وہ ٹیم ورک کے لحاظ سے دنیا کی بہترین مثالوں میں سے ایک ہے۔

نیب کا بل

مزید :

صفحہ اول -