امریکہ میں سیاہ فام لڑ کی کی ہلاکت کیخلاف احتجاج، مظاہرین اور پولیس میں جھڑپیں، 4ہلاک، متعددزخمی

      امریکہ میں سیاہ فام لڑ کی کی ہلاکت کیخلاف احتجاج، مظاہرین اور پولیس میں ...

  

واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک، آن لائن) امریکہ میں سیاہ فام لڑکی کی ہلاکت کے خلاف مسلح احتجاج شروع ہو گیا۔غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق جدید اسلحے سے لیس مظاہرین نے کینکٹی کٹ کے شہر لیوس ویلے میں احتجاجی مارچ کیا احتجاج کے دوران غلطی سے گولی چلنے سے 3 افراد زخمی بھی ہو گئے۔دوسری جانب مارچ کو روکنے کے لیے سفید فام امریکیوں نے بھی ہتھیار اٹھا لیے تاہم دونوں گروپس کو علیحدہ رکھنے کے لیے پولیس کی بھاری نفری تعینات کر دی گئی۔امریکی ریاست ٹیکساس کے شہر آسٹن میں ’بلیک لائیوز میٹر‘ تحریک کے ایک احتجاجی مظاہرے میں فائرنگ سے ایک شخص ہلاک ہو گیا ہے۔ ہفتے کو احتجاجی مظاہرہ جاری تھا کہ حملہ آور نے فائرنگ شروع کر دی۔ بتایا گیا ہے کہ مشتبہ ملزم کو حراست میں لے لیا گیا ہے اور اس سے پوچھ گچھ جاری ہے۔ ادھر سیاٹل میں گزشتہ روز اسی تحریک کی ایک بہت بڑی ریلی نکالی گئی، جس میں ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ مشتعل مظاہرین نے ایک زیر تعمیر حراستی مرکز کو نذر آتش کر دیا، جس کے بعد جھڑپوں میں کم از کم پینتالیس افراد کو گرفتار کر لیا گیا۔۔ امریکی میڈیا کے مطابق سیاہ فام امریکی جارج فلائیڈ کے پولیس اہل کار کے ہاتھوں قتل کے بعد نسلی امتیاز کیخلاف شروع ہونیوالا احتجاجی سلسلہ ختم نہ ہو سکا، ریاست اوریگان کے شہر پورٹ لینڈ اور واشنگٹن اسٹیٹ کے شہر سیاٹل میں ایک بار پھر مظاہرین اور پولیس میں جھڑپیں ہوئی ہیں۔ مظاہرین نے پولیس کی فنڈنگ ختم کرنے اور وفاقی فوجی دستے واپس بھیجنے کا مطالبہ کر دیا ہے، ڈیموکریٹ پارٹی کا کہنا ہے کہ فوجی دستے طاقت کا استعمال کر کے شہریوں کو مشتعل کر رہے ہیں۔دوسری طرف امریکی حکام نے کہا ہے کہ وسطی کیلیفورنیا میں فائرنگ کے باعث 3افراد ہلاک 4افراد زخمی ہوگئے۔پولیس ذرائع کے مطابق وہاں بظاہر ایک بڑی تقریب چل رہی تھی اور کسی نے ہجوم پر فائرنگ کر دی مزید کہا گیا ہے کہ مشتبہ شخص پتلا سیاہ فام ہے جس نے ٹوپی دار کالی قمیص پہنی ہوئی ہے اور وہ نیم آٹو ہتھیار سے مسلح ہے، کئی ملین کی آبادی والے امریکی شہر شکاگو میں کرسٹوفر کولمبس کا ایک متنازعہ مجسمہ ہٹا دیا گیا ہے۔ ایسا نسل پرستی کے خلاف اس وسیع تر تحریک کی وجہ سے کیا گیا، جس کا سبب سیاہ فام امریکی شہریوں کے خلاف متعصبانہ سوچ بنی۔جارج فلوئڈ کی موت کے بعد ریاست مینیسوٹا کے دارالحکومت سینٹ پال میں بھی مظاہرین نے کرسٹوفر کولمبس کا ایک مجسمہ گرا دیا تھا۔شکاگو سے موصولہ رپورٹوں کے مطابق یہ مجسمہ اس چبوترے سے ہٹا دیا گیا، جہاں وہ کئی عشروں سے نصب تھا۔ یہ متنازعہ مجسمہ ہٹائے جانے کا حکم شہر کی خاتون میئر لوری لائٹ فٹ نے دیا تھا

امریکہ احتجاج

مزید :

صفحہ اول -