پاکستانی مصنوعات کی بیرون ممالک منڈیوں تک رسائی کیلئے حکومتی سرپرستی ناگزیر: محمد اسلم طاہر

پاکستانی مصنوعات کی بیرون ممالک منڈیوں تک رسائی کیلئے حکومتی سرپرستی ...

  

اسلام آباد (اے پی پی) زیادہ پیداواری لاگت کی وجہ سے پاکستانی مصنوعات کو عالمی مارکیٹوں میں چیلنجز کا سامنا ہے, مارکیٹنگ اور عالمی منڈیوں تک رسائی کے لئے حکومتی سرپرستی ناگزیر ہے۔ پاکستان کارپٹ مینو فیکچررز اینڈ ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین محمد اسلم طاہر نے کہا ہے کہ پاکستانی مصنوعات کی بیرون ممالک بھرپور مارکیٹنگ اور منڈیوں تک رسائی کے لئے حکومتی سرپرستی نا گزیر ہے. برآمدات کے فروغ کیلئے کامیاب ممالک کی پالیسیوں کو سٹڈی کیا جائے۔ زیادہ پیداواری لاگت کی وجہ سے عالمی مارکیٹوں میں بڑے چیلنج کا سامنا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ویڈیو لنک کے ذریعے نارتھ اور ساؤ تھ سرکلز کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پرچیئر پرسن کارپٹ ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ پرویز حنیف، وائس چیئرمین شیخ عامر خالد، سینئر مرکزی رہنما عبد اللطیف ملک، سینئر ممبر ریاض احمد، سعید خان، اعجاز الرحمان، محمد اکبر ملک، میجر (ر)اخترنذیر سمیت دیگر بھی موجود تھے۔ محمد اسلم طاہر نے کہا کہ حکومت ہاتھ سے بنے قالینوں کی انڈسٹری کو درپیش مسائل کو دور کر کے سہولیات دے تاکہ دوسرے ممالک کا مقابلہ کیا جا سکے۔بڑی عالمی مارکیٹوں سے فائدہ اٹھانے اور تجارت میں توازن کے لئے پیداواری لاگت میں کمی اور برآمدکنندگان کو سہولیات فراہم کی جائیں،زیادہ پیداواری لاگت کی وجہ سے پاکستانی مصنوعات کو عالمی مارکیٹوں میں اپنی جگہ بنانے کا چیلنج درپیش ہے۔

حکومت پیداواری لاگت میں کمی کے ساتھ برآمد کنندگان کو سہولیات اور مراعات دے جس کے انتہائی دورس نتائج برآمد ہوں گے۔ انہوں نے تجویز دی کہ وزارت تجارت وٹیکسٹائل گو ل میز کانفرنس کا انعقاد کرکے تمام اسٹیک ہولڈرز سے تجاویز لے تاکہ پاکستان کی ایکسپورٹ میں اضافہ کیا جاسکے۔

مزید :

کامرس -