جون 2020ء کے دوران بجلی کی پیداوار میں 92 فیصد اضافہ

جون 2020ء کے دوران بجلی کی پیداوار میں 92 فیصد اضافہ

  

اسلام آباد (اے پی پی) مارچ 2020ء کے مقابلہ میں جون 2020ء کے دوران بجلی کی پیداوار میں 92 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ ٹاپ لائن سکیورٹیز کے تجزیہ کار سنی کمار نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ کووڈ۔19 کی وبا پھوٹنے کے بعد مارچ 2020ء کے دوران بجلی کی پیداوار میں کمی ہوئی کیونکہ احتیاطی اقدامات کے باعث طلب میں بھی کمی واقع ہوئی تھی تاہم جون 2020ء کے دوران بجلی کی پیداوار میں 92 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بجلی کی پیداوار میں اضافہ اس امر کی عکاسی کرتا ہے کہ لاک ڈاؤن کے بعد صنعتی شعبہ کی سرگرمیاں بحال ہوئی ہیں۔ رپورٹ کے مطابق مارچ 2019ء کے دوران بجلی کی پیداوار 7621 گیگاواٹ/ گھنٹہ رہی تھی تاہم مارچ 2020ء کے دوران پیداوار 9 فیصد کی کمی سے 6911 گیگا واٹ /گھنٹہ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مارچ 2020ء کے دوران کووڈ۔19 کی وبا کے باعث احتیاطی اقدامات، لاک ڈاؤنز اور ریسٹورینٹس وغیرہ کی بندش سے بجلی کی پیداوار کم ہوئی۔

  رپورٹ کے مطابق جون 2019ء کے مقابلہ میں جون 2020ء کے دوران بجلی کی پیداوار میں ایک فیصد اضافہ ہواہے۔ جون 2019ء کے دوران بجلی کی پیداوار 13 ہزار 157 گیگاواٹ/گھنٹہ رہی تھی جو جون 2020ء میں 13 ہزار 288 گیگاواٹ/گھنٹہ تک بڑھ گئی۔ رپورٹ کے مطابق مالی سال 2019ء کے مقابلہ میں مالی سال 2020ء کے دوران بجلی کی پیداوار میں ایک فیصد کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔ مالی سال 2019ء کے دوران بجلی کی پیداوار ایک لاکھ 22 ہزار 708 گیگاواٹ /گھنٹہ رہی تھی جو مالی سال 2019ء کے دوران بجلی کی پیداوار ایک لاکھ 22ہزار 708 گیگاواٹ/گھنٹہ رہی تھی جو مالی سال 2020ء کے دوران ایک لاکھ 21 ہزار 867 گیگاواٹ/گھنٹہ رہی ہے۔ رپورٹ کے مطابق گزشتہ ملالی سال کے دوران بجلی پیدا کرنے کے لئے استعمال ہونے والے فیول کی اوسط قیمت میں 3 فیصد کمی سے 5.97 روپے یونٹ (کلوواٹ/فی گھنٹہ) رہی ہے جبکہ مالی سال 2019ء کے دوران بجلی کی اوسط فی یونٹ قیمت 6.13 روپے رہی تھی۔

مزید :

کامرس -