پولیس سسٹم میں خود احتسابی کا عمل شروع

پولیس سسٹم میں خود احتسابی کا عمل شروع

  

تھانہ کلچر کو تبدیلی کرنے کیلئے آئی جی پنجاب انعام غنی نے سال 2021کو تھانہ کا سال قرار دیا ہے، جس کی وجہ سے ڈی آئی جی حضرات، ڈی پی اوز تھانہ جات کے اچانک دورے کر رہے ہیں، دوروں کے دوران تھانہ جات کی صفائی، ریکارڈ کی انسپکشن،فرنٹ ڈیسک پر پینڈنگ درخواستوں کو چیکنگ، جرائم اور امن وامان کے حوالہ سے کوششوں کا جا ئزہ لینا اور حوالات میں سی سی ٹی وی کیمروں کوبھی چیکنگ کا سلسلہ جاری ہے، تھانوں کے اچانک دوروں کا مقصدپولیس افسران کی کارکردگی کو جانچنااور انکی استعداد کار میں اضافہ کرنا ہے اس حوالے سے ڈی پی او قصور عمران کشور  کا کہنا ہے کہ آئی جی پنجاب نے سال 2021 کو تھانہ کا سال قرار دیا ہے کیونکہ تھانہ ہی وہ مین یونٹ ہے جہاں پرپبلک سب سے پہلے اپنی شکایات لیکر آتی ہے اس یونٹ میں جب تک بہتری نہیں آتی اس وقت تک پبلک سروس کی ڈلیوری میں بہتری نہیں آ سکتی، تھانہ کلچر کی بہتری اولین ترجیح ہے، ہماری تمام تر سرگرمیوں کا محور تھانہ ہے، عوام کو انصاف کی فراہمی میں کوتاہی اور مقدمات کے اندراج میں تاخیر کسی صورت برداشت نہیں کی جائے گی، عوام کا تھانہ پر اعتماد بحال کریں گے، ڈی پی او قصور نے مزید کہا کہ تھانہ کلچر میں تبدیلی کے حوالے سے ایس ایچ او تھانہ مصطفی آباد ڈاکٹر ذوالفقار علی کا کردار مثالی ہے، تھانہ کی حوالات، محرر روم، فرنٹ ڈیسک اور ایس ایچ اوز کے دفتر تک میں کیمرے نصب کر دئیے گئے ہیں تاکہ تھانہ میں آنے والے ہر سائل کا ریکارڈ موجود ہو،پولیس سسٹم میں خود احتسابی کا عمل شروع کر دیا گیا ہے، کرونا کی وجہ سے کھلی کچہریوں کے رکنے والے سلسلے کو دوبارہ شروع کر دیا گیا ہے، عوام کی سہولت کیلئے خدمت مرکز کو فعال کر دیا گیا ہے جہاں پر ایک ہی چھت کے نیچے 14سہولیات فراہم کر دی گئیں، دیہات میں جرائم کنٹرول کرنے کیلئے ٹھیکری پہرہ اہمیت کا حامل ہے، ایس ایچ اوز کو ہدایات جاری کی ہیں کہ وہ نمبردار حضرات سے میٹنگ کرکے دیہات میں ٹھیکری پہرے کو بھی یقینی بنائیں، کریمنلز کے خلاف ہنگامی بنیادوں پر کریک ڈاؤن کریں تاکہ شہریوں کی جان ومال کی حفاظت کو یقینی بنایا جاسکے،پولیس افسران اپنی ڈیوٹی ایمانداری کے ساتھ سر انجام دیں کیونکہ ایماندار پولیس افسران کو ہی عوام سے عزت ملے گی،تھانہ میں آنے والے سائلین سے خو ش اخلاقی سے پیش آئیں تاکہ پولیس اور عوام کے درمیان بھروسہ کاایک مضبوط رشتہ پیدا ہوسکے۔

 عوام کو انصاف ان کی دہلیزپر پہنچانے کیلئے متعدد تھانوں میں کھلی کچہریوں کا آغاز کر دیا گیا ہے، اسی سلسلہ میں تھانہ مصطفی آباد میں بھی کھلی کچہری کا اہتمام کیا گیا، کھلی کچہری کیلئے تھانہ مصطفی آباد آمد کے موقع پر ڈی پی او قصور عمران کشور کا شاندارانداز میں استقبال کیا گیا، سیاسی و سماجی جماعتوں کے نمائندوں اور صحافیوں کی طرف سے پھولوں کی پتیاں نچھاور کی گئیں، اس موقع پر کلین اینڈ گرین پاکستان مہم کے سلسلہ میں پودے لگا کر شجر کاری مہم کا افتتاح کیا اور پولیس ملازمین کے لئے میس ہال کا بھی افتتاح کیاگیا،اس موقع پر مقدمہ قتل سمیت سنگین مقدمات کے مدعیوں سے ملاقات کی، رجو ڈکیت گینگ کے سرغنہ محمد رضوان عرف رضوانی، رضوان میو، ناصر میو، ارشاد عرف شادو، محمد ارمان عرف دانی، وقاص میو سے بر آمد ہونے والا مال مسروقہ مالکان میں تقسیم کیا گیا، رضوانی ڈکیت گینگ کی گرفتاری پر ڈی پی او قصور عمران کشور نے ایس ایچ او ڈاکٹر ذوالفقار علی،سب انسپکٹر طاہر خاں اور مبشر اے ایس آئی کو نقد انعام اور تعریفی سرٹیفکیٹ دینے کا اعلان کیا،کھلی کچہری کے دوران عوامی شکایات سن کر انہیں موقع پر حل کرنے کے احکامات جاری کئے، قصور پولیس کی طرف سے شہریوں کے جان و مال کے تحفظ کویقینی بنانے کیلئے سماج دشمن عناصر کے خلاف مہم بھی جاری ہے، قصور پولیس نے ڈی پی او قصورعمران کشورکی زیر نگرانی ماہ جون کے دوران مجرمان اشتہاریوں کے خلاف کاروائیاں کرتے ہوئے قتل، ڈکیتی، رابری جیسی سنگین مقدمات میں ملوث124 خطرناک مجرمان اشتہاریوں جبکہ14عدالتی مفروران کو گرفتار کیا، گرفتار مجرمان اشتہاریوں میں 45اے کیٹگری کے اشتہاری بھی شامل ہیں، اسی طرح منشیات فروشوں کے خلاف بڑے پیمانے پر کریک ڈاؤن کرتے ہوئے 94 بدنام زمانہ منشیات فروشوں کو گرفتار کرکے ملزمان کے قبضہ سے52 کلو گرام چرس،ڈیڑھ کلوگرام ہیروئن، 890 لیٹر شراب،80لیٹر لاہن اور03 چالوبھٹیاں برآمد کرکے مقدمات درج کیے،ناجائز اسلحہ رکھنے والوں کے خلاف کریک ڈاؤن کرتے ہوئے 139 ملزمان کے قبضہ سے 05 رائفل، 22 بندوق، 111 پسٹل اور 05میگزین برآمد کرکے مقدمات درج کیے،06قماربازی کے اڈوں پر چھاپے مارے گئے اور38 ملزمان کو رنگے ہاتھوں گرفتار کر کے داؤ پر لگی ہزاروں کی رقم برآمد کی گئی۔ڈکیتی اور راہزنی کی درجنوں وارداتوں میں ملوث06 خطرناک ڈکیت گینگ کے 24 ملزمان کو گرفتار کرکے ملزمان کے قبضہ سے 13لاکھ سے زائدمالیت کا مال مسروقہ اور جدید ناجائز اسلحہ برآمد کیا گیا، ملزمان کی گرفتاریوں سے32کیسز چالان ہوئے۔

٭٭٭

کھلی کچہری میں سائلین کی شکایات کا فوری ازالہ کیا گیا

اعلیٰ افسران نے تھانوں کے اچانک دورے کئے

مزید :

ایڈیشن 1 -