ضمنی انتخاب میں حصہ لینے سے متعلق درخواست واپس لینے کی بنیاد پر نمٹادی گئی

ضمنی انتخاب میں حصہ لینے سے متعلق درخواست واپس لینے کی بنیاد پر نمٹادی گئی

  

 لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہورہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس شمس محمود مرزا نے پرنسپل سیکرٹری ٹو وزیر اعلیٰ کے داماد کا سیالکوٹ سے ضمنی انتخاب میں حصہ لینے سے متعلق دائردرخواست واپس لینے کی بنیاد پر نمٹادی، پرنسپل سیکرٹری ٹو وزیراعلیٰ کے داماد کی انتخابی مہم میں حکومتی اثرورسوخ کیخلاف امیدوار نجم الحسن ایڈووکیٹ کی درخواست پرکیس کی سماعت شروع ہوئی تو الیکشن کمیشن کی جانب سے میاں مرید حسین اور حافظ عدیل اشرف عدالت میں پیش ہوئے،الیکشن کمیشن کے وکلاء نے عدالت کوبتایا کہ درخواست گزار نے جو الزامات عائد کئے ہیں،ان کی ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ افسر نے انکوائری کی، انکوائری میں کوئی الزامات ثابت نہیں  ہوئے،قواعدوضوابط کرنے والے امیدواروں کے خلاف الیکشن کمیشن کارروائی کریگا فاضل جج استفسار کیا کہ الیکشن کب ہورہے ہیں؟ اس پر درخواست گزار نے عدالت کو بتایا کہ الیکشن 29 جولائی کو ہورہے ہیں، عدالت نے کہا کہ اگر الزامات درست ثابت نہیں ہوئے تو الیکشن کروائیں، درخواست گزار کا موقف تھا کہ سیالکوٹ ہی پی 38 میں 28 جولائی کو ضمنی انتخابات ہورہے ہیں،پرنسپل سیکرٹری طاہر خورشید کے داماد احسن سلیم  بریار بھی پی پی 38 سے امیدوار ہیں، پرنسپل سیکرٹری ٹو وزیر اعلی طاہر خورشید اپنے داماد احسن سلیم بریار کی مہم چلا رہے ہیں،طاہر خورشید اپنے داماد کے لیے انتظامیہ اور ووٹروں پر اثر انداز ہو رہے ہیں الیکشن کمیشن اس کا نوٹس نہیں لے رہا،عدالت سے استدعاہے کہ طاہر خورشید کی الیکشن میں مداخلت کے اقدام کو روکاجائے۔

نمٹا دی 

مزید :

صفحہ آخر -