صوبائی دارالحکومت، گندگی کے ڈھیر، نشیبی علاقوں میں کھڑے پانی سے بیماریاں پھیلنے لگیں 

صوبائی دارالحکومت، گندگی کے ڈھیر، نشیبی علاقوں میں کھڑے پانی سے بیماریاں ...

  

لاہور (جنرل رپورٹر) صوبائی دارالحکومت کے نشیبی علاقوں سے کئی روز گزرنے کے باوجود نہ پانی نکل سکا اور نہ ہی صفائی کا نظام بہتر ہوسکا، جس کے باعث شہر کے کئی علاقوں میں اس صورتحال کے باعث بیما ریاں پھیلنے لگی ہیں، فتح گڑھ سب ڈویژن کے علاقے مہر فیاض کالونی کے اقراء سکول کے پاس تین مقامات پر پانی جمع ہے، شاہدرہ کے درجنوں علاقوں میں جن میں قاضی پارک کے گلی نمبر 33 یوسف پارک، وارث کالونی، شہاب الدین پارک، جیا موسیٰ کی بعض گلیوں میں تا حال پانی نہیں نکل سکا، واسا کے کمپلینٹ سیل سے ملنے والی معلومات کے مطابق شمالی لاہور پیکو روڈ داتا نگر، کھوکھر روڈ سمیت درجنوں گلیوں میں پانی جمع ہے، ڈولن وال، سید پور، یتیم خانہ چوک سے ملحقہ بعض ابادیوں میں بھی پانی جمع ہے، قینچی بازار اور اس کے ملحقہ گلیوں میں بھی پانی جمع ہے، دوسری طرف شہر میں صفائی کا نظام درہم برہم ہوگیا ہے، عید گزرنے کے چھٹے روز بھی صفائی کا نظام بہتر نہیں ہوسکا، صرف صفائی مین سڑکوں کی ہورہی ہے، محلوں اور گلیوں میں تاحال کونے کھردروں میں قربانی کے جانوروں کی اوجڑیاں اور فضلاء وغیرہ پڑا ہے، شہر کی ایسی آبادیاں جہاں خالی پلاٹ ہیں جن میں بارش کا پانی بھی جمع ہے اور وہاں قربانی کے جانوروں کی آلائیشیں بھی پڑی ہیں، شہریوں کا کہنا ہے کہ لاہور ویسٹ مینجمنٹ کے چیئرمین امجد اعوان ایم ڈی کو بار بار درخواستیں دی جارہی ہیں اور ٹیلیفون کئے جارہے ہیں کہ صفائی کا نظام بہتر بنایا جائے لیکن وہ سنی ان سنی کررہے ہیں، جس سے گلی محلوں میں تعفن اور بدبو پھیلی ہوئی ہے، جس سے بیماریاں پھیل رہی ہیں، اس حوالے سے لاہور ویسٹ مینجمنٹ کے چیئرمین امجد اعوان سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ شہری جہاں سے شکایت کرتے ہیں، 24 گھنٹوں کے دوران شکایت دور کی جاتی ہے اکا دکا علاقوں میں مسئلہ ہوسکتا ہے باقی پورا لاہور صاف کردیا گیا ہے، گلی محلوں میں بھی آپریشن شروع کروا دیا گیا ہے۔

گندگی کے ڈھیر

مزید :

صفحہ آخر -