حریت کانفرنس کی مکمل ہڑتال کی اپیل، مقبوضہ وادی میں کرفیو نافذ

حریت کانفرنس کی مکمل ہڑتال کی اپیل، مقبوضہ وادی میں کرفیو نافذ

  

 سرینگر(این این آئی)غیر قانونی طور پر بھارت کے زیر قبضہ جموں و کشمیرمیں بھارتی صدر رام ناتھ کووند کے مقبوضہ علاقے کے دورے کے خلاف احتجاج کیلئے (آج)منگل کو مکمل ہڑتال کی جائے گی۔کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق کل جماعتی حریت کانفرنس کے ترجمان نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہاہے کہ بھارتی صدر اپنی افواج کے سپریم کمانڈر ہونے کی حیثیت سے کشمیری نوجوانوں کے وحشیانہ قتل عام میں ملوث ہیں اور وہ فورسز اہلکاروں کے ساتھ ملاقات کے علاوہ مقبوضہ علاقے میں نہتے کشمیریوں پر مظالم بڑھانے کے طریقوں پر بات چیت کے فوجی مشن پر ہیں۔ انہوں نے کہاکہ پورے مقبوضہ علاقے میں خونریزی جاری ہے اور کشمیری شہداء کی میتوں کو لواحقین کے حوالے کرنے کی بجائے انہیں آخری رسومات کی ادائیگی کے بغیر نامعلوم مقامات پر واقع قبرستانوں میں دفن کردیا جاتا ہے۔ ترجمان نے اقوام متحدہ کی انسانی حقو ق کونسل اور انسانی حقوق کی دیگر بین الاقوامی تنظیموں پر زوردیا کہ وہ بھارت کو کشمیریوں کی نسل کشی ُ سے روکیں اور سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق تنازعہ کشمیر کے حل کیلئے اپنا اہم کردار ادا کریں۔ ادھر قابض انتظامیہ نے بھارتی صدر کے دورے کے خلاف احتجاجی مظاہروں کو روکنے کیلئے سرینگر اور مقبوضہ جموں وکشمیر کے دیگر علاقوں میں غیر اعلانیہ کرفیو اور سخت پابندیاں نافذ کر دی ہیں۔ تمام اہم داخلی اور خارجی مقامات پر پولیس اور سینٹرل ریزروپولیس فورس کے اہلکاروں کو تعینات کیاگیا ہے۔پرائیویٹ گاڑیوں کو تلاشی کیلئے روکا جارہا ہے جبکہ ناکوں پر راہگیروں کی سخت جامہ تلاشی لی جارہی ہے۔ ٹریفک پولیس نے ایک ایڈوائزری میں اعلان کیا ہے کہ کل بولیوارڈ۔گپکار روڈ پر گاڑیوں کی آمد ورفت معطل رہے گی۔ دریں اثنا بھارتی فوجیوں نے اپنی ریاستی دہشت گردی کی تازہ کارروائی کے دوران پیر کو ضلع کولگام کے علاقے اہر بل میں ایک اورکشمیری نوجوان کو شہید کر دیا۔نوجوان کو تلاشی اور محاصرے کی ایک پرتشدد کارروائی کے دوران شہیدکیاگیا۔ 

کشمیر،کرفیو

 برلن (آئی این پی) شرقی جرمنی کے شہر کمنٹز میں پاکستانی کمیونٹی کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کانفرنس کا انعقاد کیا گیا جس میں برلن میں پاکستانی سفارتخانے کے حکام اور بڑی تعداد میں پاکستانیوں  نے شرکت کی۔ اس موقع پر ڈپٹی سفیر سارہ خان نے کہا کشمیری گزشتہ 74 سالوں سے عالمی دنیاسے انصاف کے منتظر ہیں ہم کشمیریوں کیساتھ ہر ہر میدان میں ساتھ کھڑے ہیں کشمیریوں کو تنہا نہیں چھوڑینگے۔ مقررین نے کہا  کشمیر پاکستان کا شہ رگ ہیں شہ رگ کے بغیر انسان زندہ نہیں رہ سکتا ہم کشمیر کی ازادی تک احتجاجی تحریکیں جاری رکھے گے، 5 اگست 2019 کا دن کشمیریوں کی آزادی چھیننے کے مترادف ہے۔کشمیر کانفرنس میں بھارتی جارحیت کیخلاف قراداد متفقہ طور پر منظور کی گئی  جس  کے مطابق مقبوضہ جموں وکشمیر کی 5 اگست 2019 سے پہلے والی حیثیت کو بحال کیا جائے۔اور قانون میں جو تبدیلی کی گئی ہے اسے واپس لیا جائے۔  

کشمیرکانفرنس

مزید :

صفحہ اول -