ہسپتال میں مریضہ جاں بحق، تحقیقات مکمل، معاملہ دبانے کی کوشش

ہسپتال میں مریضہ جاں بحق، تحقیقات مکمل، معاملہ دبانے کی کوشش

  

کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر)تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال میں خاتون مریضہ کے جاں بحق ہونے کیمعاملے پرسیکرٹری ہیلتھ کی خصوصی ٹیم کے ساتھ دیگر 3 ٹیموں نے 2روز میں تحقیقات مکمل کرلیں، چاروں ٹیموں نے مشترکہ تحقیقات کی،ڈاکٹرز، نرسز، سٹاف اور لواحقین کے بیانات قلمبند کیے، ریکارڈ کا معائنہ کیا، غفلت ولاپرواہی کا ذمہ دار کون نکلا،قصوروار کس کو ٹھہرایا گیا، تحقیقاتی رپورٹ صیغہ رازپررپورٹ سوالیہ نشان بن گئی،تحقیقاتی ٹیمیں واپس روانہ ہوگئیتفصیل کے مطابق غلام صابرنامی شخص کی بیوی اقرا بی بی کو ڈیلیوری کے سلسلہ میں رات کے وقت تحصیل(بقیہ نمبر6صفحہ6پر)

 ہیڈ کوارٹر اسپتال کوٹ ادو  گیاتھاجہاں ڈاکٹروں نے اس کا فوری کامیاب آپریشن کیاتھا،آپریش کے کئی گھنٹے بعد زچہ کی طبعیت خراب ھونے پر ڈیوٹی پر موجود عملہ نیاسے خون لگایا تھاجس پر اسکی طبعیت مزید بگڑی تھی تو ڈیوٹی پر آن کال ڈاکٹر حسن علی اعوان کو بلایا گیاتھا لیکن ڈاکٹر نہ آیاتھا اورخاتون اقرا بی بی خالق حقیقی سے جا ملی تھی،جس پر ورثا مشتعل ہو گئے تھے،مرحومہ کے رشتہ داروں اور اہل علاقہ کے احتجاج پر وزیر مملکت ڈاکٹر میاں شبیر علی قریشی نے اس واقعہ کا نوٹس لیا تھاجس پر چیف سیکرٹری ہیلتھ پنجاب ڈاکٹر سارہ اسلم نے تحیقاتی ٹیم مقررکرکے 24گھنٹے میں رپورٹ طلب کی تھی جبکہ دیگر 3 مختلف ٹیمیں بھی تحقیقات کے لئے پہنچیں، چاروں ٹیموں نے مشترکہ تحقیقات کیں،ڈاکٹرز نرسز اور سٹاف کے علاہ جاں بحق خاتون کے ورثا کے بیانات قلمبند کئے  اورریکارڈ کا معائنہ بھی کیا جبکہ سی سی ٹی وی فوٹیج بھی دیکھیں،  جاں بحق ہونے والیخاتون اقرا بی بی کے ورثا نے اپنے بیانات میں تحصیل ہیڈ کوارٹر ھسپتال کے فزیشن ڈاکٹر حسن علی اعوان کو قصوروار ٹھہرایا ھے،ادھر تحقیقاتی ٹیمیں اپنا کام مکمل کر کے واپس روانہ ہو گئی ہیں،ذرائع کے مطابق معاملے کو دبانے کے لئے فی الحال  تحقیقاتی رپورٹ صیغہ راز میں رکھی جارہی ہے،غفلت ولاپرواہی کا ذمہ دار کون نکلا قصوروار کس کو ٹھہرایا گیا ہے، تحقیقاتی رپورٹ منظرعام پر آئیگی یا کہ نہیں یہ سوالیہ نشان ہے،ادھر مصدقہ زرائع کے مطابق انکوائری کی رپورٹ سی سی او آفس مظفر گڑھ میں مکمل کی جائے گی۔

جاں بحق

مزید :

ملتان صفحہ آخر -