پی ڈی اے کے انجینئر جنید اکبر کے قتل کیخلاف ایل ایل اے ایس کا احتجاج

پی ڈی اے کے انجینئر جنید اکبر کے قتل کیخلاف ایل ایل اے ایس کا احتجاج

  

پشاور(سٹی رپورٹر)پشاور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر انجینئر جنید اکبر  کے بہیمانہ قتل کے خلاف پی ڈی اے ایل ایل اے ایس نے حیات آباد پی ڈی اے آفس کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا اور مطالبہ کیا ہے کہ جنید اکبر کے قاتلوں کو فوری گرفتار کیا جائے ورنہ احتجاج میں شدت لائیں گے مظاہرین کی قیادت پی ڈی اے ایل ایل اے ایس کے صدر عبدالغفور خان، پی ڈی اے یونین کے صدر دین محمد اور سابق ناظم عمران خان سالارزئی سمیت آفیسرز اور ملازمین نے  کی مظاہرین نے کہا کہ چند روز قبل پی ڈی اے کے آفیسر ڈاکٹر جنید اکبر کو نامعلوم افراد نے قتل کر دیا ہے تاہم ان کے قاتلوں کو تاحال گرفتار نہیں کیا جو افسوسناک ہے انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا، گورنر، کور کمانڈر، آئی جی پولیس اور دیگر متعلقہ حکام جنید اکبر کے بہیمانہ قتل پر نوٹس لے اور ان کے قاتلوں کو فوری گرفتار کیا جائے ورنہ پی ڈی اے آفیسرز اور ملازمین احتجاج میں شدت لائیں گیصوبائی دارلحکومت پشاور میں پیسکو اور سوئی ناردرن گیس کمپنی کے صارفین کو اپنے ماہانہ بلوں کی آدائیگی میں کمرشل بنکوں کے عملے کی نامناسب رویئے کی وجہ سے شدید دشواریوں کا سامنا ہے۔پشاور شہر میں کمرشل بنکنگ کی خدمات فراہم کرنے والے بنکوں کے مختلف برانچوں میں اسٹیٹ بنک کے واضح احکامات کے باوجود نہ تو یوٹیلٹی بلز کی وصولی کے لئے مخصوص کاونٹر قائم کئے گئے ہیں اور اگر کسی بنک نے کاونٹر قائم بھی کیا ہے تو وہاں عملے کی کمی کا بہانہ بنا کر صارفین کو ایک بنک سے دوسرے بنک جانے کا مشورہ دیا جارہا ہے۔اگرچہ سٹیٹ بنک آف پاکستان کی جانب سے وضع کردہ بنکنگ رولز کے رو سے ملک بھر میں کام کرنے والے کمرشل بنک صارفین سے یوٹیلٹی بلز وصول کرنے کے پابند ہیں، لیکن عوام میں اس حوالے سے شعور کی کمی کا غلط فائدہ اٹھاتے ہوئے کمرشل بنک عملہ اکثر اوقات صارفین نے یوٹیلٹی بل وصول کرنے سے انکار کرتے ہیں۔کمرشل بنکوں کے نامناسب  طرز عمل کی وجہ سے صارفین کو بلوں کی بروقت ادائیگی میں دشواریوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور اکثر اوقات صارفین کوتاخیر سے آدائیگی کی وجہ سے اضافی رقم بھی ادا کرنا پڑتا ہے۔واضح رہے کہ کہ ملک میں کمرشل بنکوں کی کارگزاری پر نظر رکھنے اور صارفین کی شکایات کے ازالے کے لئے بنکنگ محتسب کا بھی ادارہ قائم ہے، لیکن کمرشل بنک نا تو سٹیٹ بنک آف پاکستان کے احکامات پر عمل کرتے ہیں اور نہ ہی بنکنگ محتسب  کے ادارے کی موجودگی کا احساس کرتے ہوئے صارفین کو خدمات کی فراہمی میں بہتری لانے کے لئے اقدامات کرتے ہیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -