کراچی سمیت سندھ بھر میں انٹر کے سالانہ امتحانات کا آغاز

  کراچی سمیت سندھ بھر میں انٹر کے سالانہ امتحانات کا آغاز

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ بھر میں انٹر کے سالانہ امتحانات 2020-2021 جاری ہیں۔ کراچی میں بارہویں جماعت کا  پہلا پرچہ پیر کو طبیعیات کا ہوا جس کا دورانیہ 9.30 سے 11.30 تک دو گھنٹے کا تھا۔رواں برس صرف اختیاری مضامین کا پرچہ لیا جارہا ہے جس کے باعث بارہویں جماعت کے پری میڈیکل کے طلبا 4 جبکہ پری انجینئرنگ کے طلبا 3 پرچے دینگے۔ پرچے 50 فیصد کثیر الانتخابی سوالات، 30 فیصد مختصر جبکہ 20 فیصد تفصیلی سوالات کے جوابات پر مشتمل ہیں۔مجموعی طور پر ایک لاکھ 12 ہزار 600 طلبا امتحان میں شریک ہورہے ہیں۔ 210 امتحانی مراکز قائم کئے گئے ہیں جس میں سے 66 حساس قرار دیئے گئے ہیں۔ صبح کی شفٹ میں 114 جبکہ شام کی شفٹ میں 96 امتحانی مراکز قائم کئے گئے ہیں۔امتحانات کے دوران نقل کی روک تھام کے لئے خصوصی انتظامات کیے گئے ہیں، 2 شکایتی سیل بھی قائم کئے گئے ہیں۔ امتحانی مراکز کے قریب تمام فوٹو اسٹیٹ کی دکانیں بند ہونگی۔ نقل کی روک تھام کے لئے ایف آئی اے سائبر ونگ کو خط لکھا گیا ہے۔ کسی بھی طالبعلم کو موبائل فون یا کسی بھی قسم کی الیکٹرونک ڈیوائس لانے کی اجازت نہیں ہے۔ بصورت دیگر پرچہ منسوخ کردیا جائے گا۔16 رکنی ویجلینس ٹیم بنائی گئی ہے جو مختلف امتحانی مراکز کا دورہ کر رہی ہے۔ 210 ویجیلینس افسر بھی تعینات ہیں۔ پرچہ آٹ نہ ہونے کے لئے اسکول پرنسپل اور ویجلینس آفیسر کو احکامات جاری کئے گئے ہیں۔ دریں اثناء سکھربورڈ کے زیر انتظام انٹر کے سالانہ امتحانات شروع،ٹیموں کے مراکز پرچھاپے،کئی امیدواروں کے موبائل فون ضبط،میٹرک کے امتحانات میں موبائل فون نقل کا ذریعہ بن گیا تھا اس بار اس پر بھی قابو پارہے ہیں، تفصیلات کے مطابق سکھرکے ثانوی و اعلی ثانوی تعلیمی بورڈ کے زیر انتظام بارہویں جماعت (انٹر) کے سالانہ امتحانات آج سے سکھر،خیرپور اور گھوٹکی اضلاع کے 101 امتحانی مراکز میں شروع ہوگئے ہیں پہلے روز امتحانی مراکز میں 31756 امیدواروں سے فزکس کا پہلا پرچہ لیا گیا امتحانات کے پہلے روز سکھر بورڈ کی جانب سے تشکیل دی گئی انسپکشن ٹیموں نے مختلف امتحانی مراکز پر چھاپے مارے اور کئی امیدواروں کے موبائل فون ضبط کرلیے اس موقع پر سیکریٹری سکھر بورڈ محمد رفیق پلھ نے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ میٹرک کے امتحانات میں موبائل فون نقل کا ذریعہ بن گیا تھا اس لیے اس بار پابندی کے باوجود موبائل فون لانے والے امیدواراں کے موبائل فون ہی ضبط کیے جائیں گے۔

امتحانات

مزید :

پشاورصفحہ آخر -