”دی گریٹر پاکستان موومنٹ“ کے عہدیداران کا اعلان کردیا گیا

”دی گریٹر پاکستان موومنٹ“ کے عہدیداران کا اعلان کردیا گیا
”دی گریٹر پاکستان موومنٹ“ کے عہدیداران کا اعلان کردیا گیا

  

دبئی (طاہر منیر طاہر) پاکستان کا قیام خالصتاً نظریاتی بنیادوں پر عمل میں آیا تھا۔ جس کی اساس ”دو قومی نظریہ“ ہے۔ جس کے مفہوم، مطلب اور پس منظر سے سب آگاہ ہیں لیکن اگر آج ہم موجودہ پاکستان کے حالات کا جائزہ لیں تو یہ وہ پاکستان نہیں ہے جس کا خواب علامہ محمد اقبال نے دیکھا تھا اور بابائے قوم قائداعظم محمد علی جناح نے اس کی بنیاد رکھی تھی بلکہ آج کا پاکستان بالکل مختلف نظر آتا ہے بلکہ پاکستان اپنی اصل ڈگر سے ہٹ گیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار ”دی گریٹر پاکستان موومنٹ“ (عظیم تر پاکستان تحریک) کے بانی و چیئرمین عزیز خان نے کیا۔ 

عزیز خان نے کہا کہ ہم نے پاکستان کو اس کی اصل راہ پر واپس لانے اور پاکستان کے بانی قائداعظم محمد علی جناح کی خواہش کے مطابق بنانے کے لیے متذکرہ تحریک کا آغاز کیا ہے جسے ایک سال کے اندر ہی خوب پذیرائی ملی ہے اور پاکستانیوں کی ایک کثیر تعداد اندرون اور بیرون ملک اسے پسند کررہی ہے۔ عزیز خان نے بتایا کہ اب تک پانچ ہزار سے زائد لوگ ہماری تحریک کے ممبر بن چکے ہیں جبکہ ممبر شپ کا سلسلہ جاری ہے۔

دی گریٹر پاکستان موومنٹ کی طرف سے جارہ کردہ ہینڈ آﺅٹ کے مطابق اس کے بانی و چیئرمین عزیز خان جبکہ دیگر عہدیداران میں نجات حسین صدر تنظیم ہذا برائے فرانس و یورپ، محمد خیل خان صدر سلطنت آف عمان، ثمینہ شفیع صدر ویمن ونگ، شعیب کمال سینئر نائب صدر سلطنت آف عمان، نصرت شاہین آرگنائزر ویلفیئر پراجیکٹس، ظلم ہما ممبر سنٹرل آرگنائزر کمیٹی، محمد دائم ممبر ڈسٹرکٹ آرگنائزنگ کمیٹی خیر پور سندھ، فاروق نواز چیف آرگنائزر یوتھ ونگ پختونخوا، سہیل صدیقی صدر یوتھ ونگ کراچی اور تہمینہ خان کو ممبر پراونشل آرگنائزنگ کمیٹی پختونخواہ شامل ہیں۔

دی گریٹر پاکستان موومنٹ کے چیئرمین عزیز خان کا کہنا ہے کہ ہم سب مل کر پاکستان کو ہر لحاظ سے مضبوط بنائیں گے جس کے ہر طبقہ فکر کے لوگوں کی سمولیت ضروری ہے۔

مزید :

تارکین پاکستان -