اسرائیل نے متحدہ عرب امارات کو زورد ار جھٹکا دیدیا، امیدوں پر پانی پھر گیا

اسرائیل نے متحدہ عرب امارات کو زورد ار جھٹکا دیدیا، امیدوں پر پانی پھر گیا
اسرائیل نے متحدہ عرب امارات کو زورد ار جھٹکا دیدیا، امیدوں پر پانی پھر گیا

  

تل ابیب(مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ عرب امارات نے حال ہی میں اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کیے تھے جس کے بعد دونوں ممالک کے مابین مختلف تجارتی معاہدے بھی ہوئے تھے۔ ان میں سے ایک معاہدہ پائپ لائن کے ذریعے خلیجی تیل کو ایشکیلون کی بندرگاہ تک پہنچانے کا تھا جو اب اسرائیل نے ماحولیات سے متعلق تحفظات کے پیش نظر منجمد کر دیا ہے۔ اسرائیلی وزارت ماحولیاتی تحفظ کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ متحدہ عرب امارات کے ساتھ ہونے والی آئل ٹرانسپورٹ ڈیل منجمد کر دی گئی ہے کیونکہ اس معاہدے کو ماحولیات کے لیے کام کرنے والی تنظیموں اور کارکنوں کی طرف سے تنقید کا نشانہ بنایا جا رہاہے۔

رپورٹ کے مطابق اسرائیل اور متحدہ عرب امارات کے مابین ہونے والے اس معاہدے کے تحت خلیجی تیل بحیرہ احمر کی بندرگاہ ایلات پر ٹینکروں کے ذریعے لایا جانا تھا اور وہاں سے ایک پائپ لائن کے ذریعے اسے ایشکیلون کی بندرگاہ تک پہنچایا جانا تھا۔ وہاں سے یہ تیل یورپ برآمد کیا جاتا۔ یہ پائپ لائن اسرائیل سے گزر کر ایشکیلون کی بندرگاہ تک پہنچنی تھی۔ 

ماحولیاتی تحفظ کے کارکنوں کی طرف سے اس معاہدے کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا جا رہا تھا کہ پائپ لائن بحیرہ احمر میں ممکنہ آلودگی کا باعث بنے گی اور سمندری حیات کی زندگی داﺅ پر لگ جائے گی۔ اسرائیل کی ماحولیاتی تنظیموں نے اس معاہدے کو عدالت میں چیلنج بھی کر دیا ہے جس کے بعد اب حکومت کی طرف سے اس معاہدے کو منجمد کر دیا گیا ہے۔ 

مزید :

بین الاقوامی -