سری لنکن سےرےز،کرکٹ شو، پنجاب ےونےورسٹی فائنل اور ساجد درانی

سری لنکن سےرےز،کرکٹ شو، پنجاب ےونےورسٹی فائنل اور ساجد درانی
سری لنکن سےرےز،کرکٹ شو، پنجاب ےونےورسٹی فائنل اور ساجد درانی

  


کرکٹ سے لگاﺅ رکھنے والے اےک بڑے طبقے کی رائے ےہ ہے کہ کھےل سے متعلق معاملات بے توجہی کا شکار ہےں قومی ٹےم مےں گروہ بندی اور آپسی ناچاقی کی خبرےں بھی مےڈےا مےں عام ہےں جبکہ عوام الناس سری لنکا کے خلاف حالےہ اےک روزہ سےرےز اورپہلے ٹےسٹ مےچ مےں شکست کے بعد اضطراب کا شکار ہےں۔مےں حےران ہوں وہ ٹےم جس نے انگلےنڈ جےسی چےمپئن ٹےم کو3-0سے شکست دی اس سے پہلے ورلڈ کپ کے سےمی فائنل تک رسائی حاصل کی پھرکچھ عرصہ پہلے سری لنکا کو تارےخی شکست سے دوچار کےا اب کن وجوہ کی بنا پر بدترےن نتائج سے ہمکنار ہے کچھ جاننے کے لےے کسی ماہر کی ضرورت نہیں ۔ کرکٹ کی حالےہ تبدےلےاں انتظامےہ سے متعلق ہوں خواہ سلےکشن کمےٹی کے بارے مےں ےہ صحےح طرز پر کرکٹ کو چلا نہیں پائےں۔ پاکستان کی کرکٹ کی تارےخ گواہ ہے کہ بہتر پرفارمنس اور جےت کے حصول کے سلسلے مےں سرکردہ اورنامور بےٹسمےن کپتان کے ساتھ عدم تعاون کرتے رہے ہےں ۔ پہلے ٹےسٹ کی پہلی اننگ مےں آٹھ کھلاڑی دوہرے ہندسے مےں داخل نہیں ہوسکے جبکہ دوسری اننگ مےں سےٹ بےٹسمےن سنچرےاں سکور نہیں کرسکے نتےجتاً شکست کا مارجن209رنزکا بنتا ہے۔ٹےم مےنجمنٹ اور شائقےن کرکٹ اس شکست کی اےک وجہ امپائرنگ بھی قرار دے رہے ہےں اور پوچھتے ہیں کہ ڈی آر اےس کا استعمال کےوں نہیں کےا جارہا۔ دراصل ڈی آر اےس مےزبان بورڈ کی صواب دےد پر استعمال کےا جاتا ہے اور کافی مہنگا نظام ہے۔ مےں حےران ہوں کہ پی سی بی کے اس سلسلے مےں سری لنکن کرکٹ بورڈ سے ڈی آر اےس رائج کرنے کے سلسلے مےں کےوں معاملات طے نہیں کےے۔ ڈی ۔آر۔ اےس عمومی طور پر مےزبان ٹےم کے مقابلے مےں مہمان ٹےم کےلئے فائدہ مند ہوتا ہے اطلاعات کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ نے اےک سو سترکنٹرےکٹ ملازمےن کو فارغ کرنے کا فےصلہ کےا ہے مجھے پوری امےد ہے کہ ذاتی تعلق اور بےرونی دباﺅ کے بعد متعدد ملازمےن دوبارہ کنٹرےکٹ حاصل کرلےں گے۔ فارغ ہونےوالے کنٹرےکٹ ےافتگان مےں سابق کپتان امتےاز احمد کا نام بھی شامل ہے ۔ شاےد چیئر مےن کرکٹ بورڈ کے علم مےں ےہ بات نہ ہو کہ جس مقام پر آج ہماری کرکٹ کھڑی ہے اس مےں امتےاز احمد کی ناقابل فراموش کاوشیں بھی شامل ہیں۔ اگر ماضی مےں کرکٹ بورڈ نے انہیں کوئی اعزازی عہدہ دےا تھا تو اس موقع پر جب کہ وہ بزرگ کرکٹرکہلانے کے زمرے مےںآچکے ہیں انہیںےہ دھچکا اور اذےت پہنچانے کی کےا ضرورت تھی۔ دوسری طرف ہمارے دوست محمدالےاس اور سرفرازنواز حال ہی مےں کرکٹ بورڈ کی جانب سے پیش کردہ کنٹرےکٹ سے فےض ےاب ہورہے ہےں۔تعجب ہے کہ امتےاز احمد جےسے عظےم کرکٹر کواےک سو ستر برطرف افراد کی فہرست مےں شامل کےا گیاہے بورڈ کا ےہ عمل قابل مذمت ہے پچھلے دنوں پی سی بی نے پی ٹی وی کے ساتھ مل کر اےشیا کپ جےتنے والی ٹےم کے اعزاز مےں اےک بڑی تقرےب کا اہتمام کےا اس سلسلے مےںوسےع پےمانے پر انتظامات کےے گئے جبکہ اس تقرےب کی رےکارڈنگ اور نشرکرنے کی ذمہ داری پاکستان ٹےلی وےژن کی تھی۔تقرےب چونکہ اہم اور متوقع طور پر تارےخی نوعےت کی تھی بہت سے مہمان ہال مےں موجود تھے جبکہ کافی تعداد مےں لوگ نہیں بھی آئے۔ مےں پی سی بی کے ان عہدےداروں کو مبارکباد پیش کرتا ہوں جنہوں نے اس تقرےب کو ےادگار بنانے کے سلسلے مےں کوئی دقےقہ نہیں چھوڑا تاہم پی ٹی وی کا شو کو پےش کرنے کا معےار انتہائی غےر معےاری تھا پروگرام کا کوئی باقاعدہ سکرپٹ نہیں تھا اور نہ ہی کوئی تسلسل ۔بلکہ بے ترتےبی ،بدنظمی اور تعطل نے ہال مےں بےٹھے ہوئے حاضرےن کو سخت ماےوس کےا۔کمپیئرنگ کا معےار انتہائی پست تھا پی ٹی وی نے اس بنے بنائے انتہائی اہم موقع اور پروگرام کا ستےاناس کردےا۔جس کا مےری طرح دےگر بہت سے حاضرےن کو بھی افسوس ہے۔ کرکٹ کے فروغ اور مقبولےت کے حوالے سے تعلےمی اور نشرےاتی ادارے بڑا اہم کردار اداکرتے ہیں اس سلسلے مےں تارےخ گواہ ہے کہ 1952لکھنﺅ ٹےسٹ کی کامےابی مےں ٹےم کے گےارہ مےں سے دس کھلاڑےوں کا تعلق پنجاب ےونےورسٹی سے تھا۔ 1947سے 1952ءتک پاکستان مےں صرف اےک فرسٹ کلاس مےچ ہوتا تھاجو پنجاب ےونےورسٹی اور گورنرالےون کے درمےان کھےلا جاتا تھا ۔

پچھلے دنوں پنجاب ےونےورسٹی نے انٹرےونےوسٹی کے فائنل کا انعقاد کےا جو ہےلے کالج اور پنجاب ےونےورسی ٹےچنگ ڈےپارٹمنٹ کے درمےان تھا فائنل مےں کھےلی گئی کرکٹ کے معےار اور پنجاب ےونےورسٹی کے شعبہ سپورٹس کی طرف سے کےے گئے وسےع انتظامات نے بہت متاثر کےا ےونےورسٹی کی انتظامےہ نے کرکٹ کے کلچر کی طرز پر اس فائنل مےچ کو اےک اہم ترےن سماجی اورثقافتی تقرےب مےں بدل دےا ۔ جامع پنجاب کے وائس چانسلر ڈاکٹر مجاہد کامران مہمان خصوصی تھے ۔تقسےم انعامات سے لے کر اختتامی لمحات تک وہ پنجاب ےونےورسٹی نےو کےمپس گراﺅنڈ مےں موجود رہے۔ حوصلہ افزائیں کےلئے کرکٹ بورڈ کے سےنئراہلکاروں ،موجودہ اور سابق ٹےسٹ کرکٹر اور منتظمےن سے گفتگو کرتے رہے جن مےں شہرہ آفاق علےم ڈار بھی شامل تھے۔ ےہ تمام مناظر بڑے حوصلہ اور امےد افزا تھے خوشگوار پےش رفت ےہ ہے کہ پنجاب ےونےوسٹی کے شعبہ سپورٹس کو چلانے مےںدوخواتےن کا اہم کردار ہے جن مےں ذکےہ ممتاز اور شمسہ ہاشمی شامل ہیں۔ مجھے پنجاب ےونےورسٹی کے اہم اور ذمہ دار مشیر اکرم چوہدری کی انتظامی خوبےوں نے بھی متاثر کےا ۔پنجاب ےونےورسٹی کے زےر انتظام کھےلا گےا ےہ فائنل کھلاڑےوں کے بہترےن کھےل انتہائی عمدہ انتظامات اور شائقےن کرکٹ کی بڑی تعداد مےں شرکت کے نقطہ نگاہ سے مدتوں ےاد رہے گا۔ لاہور ہی مےں ہمارے دےرےنہ دوست ساجد درانی ریڈےو کے سٹےشن ڈائرےکٹربن کر آئے ہیں۔ ےہ اس عہد کے بہترےن ماہرےن نشرےات مےں سے اےک ہےں۔ ان سے گفتگو ہوئی اور ےہ جان کر بہت اطمےنان ہوا کہ وہ لاہور رےڈےوسے تمام پروگراموں بالخصوص کھےلوں کے سلسلے مےں انقلابی تبدےلےاں لانے کا عزم رکھتے ہےں ۔ کھےلوں اور خاص طور پر کرکٹ کی کورےج اور کمنٹری کو اصل حالت مےں واپس لانا بھی ان کے اہداف مےں شامل ہے۔ امےد ہے کہ وہ لاہور رےڈےو کی اس ساکھ کو بحال کرنے مےں کامےاب ہوجائیں گے جس کے بارے مےں ماہرےن تواتر سے شکوک وشبہات کا اظہار کرتے چلے آرہے ہیں۔

مزید : کالم