روس، امریکا شامی خانہ جنگی رکوائیں لخدار براہیمی کا مطالبہ

روس، امریکا شامی خانہ جنگی رکوائیں لخدار براہیمی کا مطالبہ

  

     جنیوا (آن لائن)شام کے لیے خصوصی مندو ب لخدار براہیمی نے مطالبہ کیا ہے کہ امریکا اور روس کو شام میں خانہ جنگی کے خاتمے کے لیے فوری اور نتیجہ خیز کوششیں کرنی چاہیں اور اس خونریز تنازعے کے باعث انسانی جانوں کے ضیاع کو رکوانا چاہیے۔جنیوا سے موصولہ رپورٹوں کے مطابق براہیمی نے یہ بات سوئٹزر لینڈ میں شامی تنازعے کے بارے میں امریکا اور روس کے باہمی مشاورتی مذاکرات کے ایک نئے دور کے آغاز سے قبل کہی۔ ان مذاکرات میں واشنگٹن اور ماسکو کے نمائندوں کو شام کے بارے میں بین الاقوامی امن کانفرنس کے انعقاد سے متعلق مشورے کرنا تھے۔

نیوز ایجنسی روئٹرز نے جنیوا سے اپنی رپورٹوں میں لکھا ہے کہ لخضر براہیمی نے اس موقع پر یہ بھی کہا کہ ان کی رائے میں شام سے متعلق بین الاقوامی کانفرنس شاید جولائی میں بھی منعقد نہیں ہو سکے گی۔ ان کے مطابق اس تاخیر کے باعث یہ بات اور بھی ضروری ہو گئی ہے کہ واشنگٹن اور ماسکو اس تنازعے کو محدود رکھنے میں اپنا کردار ادا کریں۔براہیمی نے کہا کہ مجھے اس بات پر شبہ ہے کہ یہ کانفرنس جولائی میں منعقد ہو سکے گی۔ شامی اپوزیشن کا اگلا اجلاس چار اور پانچ جولائی کے لیے طے ہے۔ میری رائے میں ایسا نہیں ہو گا کہ تب تک شامی اپوزیشن اس کانفرنس میں شرکت کے لیے تیار ہو جائے گی۔اپنے ان اندازوں کے باوجود لخضر براہیمی نے امید ظاہر کی کہ شام کے تنازعے کے سلسلے میں خطے کی ریاستوں کی حکومتیں اور بڑی طاقتیں، خاص طور پر امریکا اور روس، اس تنازعے کے تباہ کن اثرات کو محدود رکھنے کی پوری کاوشیں کریں گی، اس وجہ سے بھی کہ حالات صرف شام میں ہی نہیں بلکہ پورے خطے میں بھی قابو سے باہر ہوتے نظر آ رہے ہیں۔

مزید :

عالمی منظر -