ٹیلی کام سیکٹر کے پالیسی ایشوز 2ماہ میں حل کرنے کی یقین دہانی

ٹیلی کام سیکٹر کے پالیسی ایشوز 2ماہ میں حل کرنے کی یقین دہانی

  

   کراچی(این این آئی) وفاقی وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی نے ٹیلی کام سیکٹر کے پالیسی ایشوز 2 ماہ میں حل کرنے کی یقین دہانی کرادی۔ٹیلی کام انڈسٹری ذرائع کے مطابق ٹیلی کام کمپنیوں کے سی ای اوز اور اعلی انتظامی افسران پر مشتمل ایک وفد نے گزشتہ روز وزیر مملکت آئی ٹی انوشہ رحمن سے ملاقات کی۔ اجلاس میں ٹیلی کام سیکٹر کو درپیش مسائل بڑھتی ہوئی کاروباری لاگت، امن و امان کیلئے سروس کی بندش، نائٹ پیکیجز پر پابندی، تھری جی لائسنس کی نیلامی سمیت ٹیکسوں کی بھرمار بالخصوص ودہولڈنگ کی شرح میں حالیہ 5 فیصد اضافے پر غور کیا گیا۔ذرائع کے مطابق وزیرمملکت نے ٹیلی کام سیکٹر پر ٹیکسوںمیں کمی کےلئے کوئی یقین دہانی نہ کراتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ یہ معاملہ وفاقی وزارت خزانہ سے متعلق ہے، اس میں وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی کا کوئی کردار نہیں۔ ٹیلی کام سیکٹر کے اعلی نمائندوں نے حکومت پر اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے یقین دلایا کہ ٹیلی کام انڈسٹری پاکستان میں ترقی کے سفر میں کردار ادا کرنے کےلئے تیار ہے تاہم اس کےلئے انڈسٹری کو سازگار حالات فراہم کئے جائیں۔اجلاس میں 2کمیٹیوں کی تشکیل کا فیصلہ کیا گیا جو آئی ٹی کے شعبے کو درپیش مسائل کے حل اور تھری جی اسپیکٹرم لائسنس کی نیلامی کی نگرانی کریں گی۔

مزید :

کامرس -