ڈپٹی کمیشنرڈی پی او ڈی ایس پی ایچ او اور گارڈز معطل

ڈپٹی کمیشنرڈی پی او ڈی ایس پی ایچ او اور گارڈز معطل

  

               ٍ    کوئٹہ(آن لائن)قائد اعظم ریذیڈنسی زیارت پر حملے کی ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ وزیراعلیٰ بلوچستان کو پیش کردی گئی وزیراعلیٰ بلوچستان نے ڈپٹی کمشنر ،ڈی پی او،ایس ایچ او،ڈی ایس پی اورریزیڈنسی کے گارڈز کو معطل کردیا15جون کو بلوچستان کے پ±ر فضا مقام زیارت میں واقع پاکستان کے بانی محمد علی جناح کی رہائش گاہ زیارت ریزیڈنسی کے اطراف چار زوردار دھماکے ہوئے ہیں جن سے لکڑی سے بنی اس عمارت کی دیواروں کے سِوا تمام سامان جل کر تباہ ہوگیا واقعہ کی ذمہ داری کالعدم تنظیم بلوچ لبریشن آرمی نے قبول کی۔ قائد اعظم ریزیڈنسی زیارت پر حملے کی ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ وزیراعلیٰ بلوچستان کو پیش کردی گئی رپورٹ کے بعد وزیراعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ نے زیارت میں قائد اعظم ریزیڈنسی پر حملے کو انتظامیہ کی غفلت اور کوتاہی قرار دیا اور ڈپٹی کمشنر ،ڈی پی او،ایس ایچ او،ڈی ایس پی اور اس قومی ورثہ کی حفاظت پر مامور دو سرکاری محافظین کو معطل کردیا وزیراعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ نے کہا ہے کہ تاریخی اور قومی اثاثوں کے تحفظ کو ہرصورت یقینی بنایا جائے گاقومی اثاثوں کا تحفظ سب کی ذمہ داری ہے اس سلسلے میں کسی قسم کی غفلت برداشت نہیں کی جائے گی ذرائع نے بتایا کہ تحقیقاتی عمل جاری رہے گا اور تحقیقات کے دوران جہاں کہیں بھی کوئی افسر یا اہلکار غفلت کا مرتکب ٹھہرا تو اس کے خلاف بھی کارروائی عمل میں لائی جائے گی یاد رہے کہ زیارت بلوچستان کا پرفضا سیاحتی مقام ہے اور پاکستان کے بانی اور پہلے گورنر جنرل قائد اعظم محمد علی جناح اپنی وفات سے قبل یہاں مقیم رہے تھے یہ خوبصورت رہائش گاہ 1892ءکے اوائل میں لکڑی سے تعمیر کی گئی تھی۔ اس دور میں برطانوی حکومت کے افسران وادیِ زیارت کے دورے کے دوران اپنی رہائش کے لیے استعمال کیا کرتے تھے۔قیام پاکستان کے بعد 1948ءمیں بانیِ پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح ناساز طبیعت کے باعث یہاں آئے تھے اور انھوں نے اپنی زندگی کے آخری دو ماہ اس رہائش گاہ میں قیام کیاان کے انتقال کے بعد اس رہائشگا ہ کو ’قائداعظم ریزیڈنسی‘ کے نام سے قومی ورثہ قرار دیتے ہوئے عجائب گھر میں تبدیل کر دیا گیا حکومت بلوچستان اور وفاقی حکومت نے اس قومی ورثے کو نشانہ بنانے کی مذمت کرتے ہوئے اس کو اس کی اصل حالت میں بحال کرنے کا فیصلہ کیا اور کہا ہے کہ اس عمارت کو اس کی اصل حالت میں بحال کرنے کےلئے ملکی و غیر ملکی ماہرین کی خدمات حاصل کی جائیں گی ۔

حملہ

مزید :

صفحہ آخر -