ہمیں لسانیت صوبائیت اور فرقہ واریت کا خاتمہ کر نا ہوگا مجیب الرحمٰن شامی

ہمیں لسانیت صوبائیت اور فرقہ واریت کا خاتمہ کر نا ہوگا مجیب الرحمٰن شامی

  

                             لاہور (جنرل رپورٹر) ڈاکٹر مجید نظامی ہمارے نظرےاتی رہبر ہےں اور آج ہر جگہ نظرئیہ پاکستان کی جوگونج سنائی دے رہی ہے وہ ان کے دم قدم سے ہے قےام پاکستان سے قبل مسلمانوں کی حالت انتہائی بری تھی لیکن آج جو خوشحالی ہے یہ پاکستان کی بدولت ہے پاکستان کی اےک نظریہ کی بنیاد پر معرض وجود مےںآےا آج ہمےں لسانےت صوبائےت اور فرقہ وارےت سے چھٹکارا حاصل کرنا ہو گا ہمےں کشمیریوں کو بھارت سے آزاد کر وانا ہے کیونکہ ہماری آزادی کمشمیر کے بغیر نامکمل ہے جھوٹ انسانےت کا سب سے بڑا دشمن ہے جس سے تمام برائیاں جنم لےتی ہےںآج ہمےں اپنے معاشرہ سے جھوت غربت اور جہالت کا خاتمہ کرنا ہے ان خےالات کا اہاز ممتاز دانشور اور روزنامہ پاکستان کے چےف اےڈٹر مجےب الرحمن شامی نے اےوان کارکنان تحرےک پاکستان قائد اعظم لاہور مےں جاری اپنی نوعےت کے منفرد پروگرام نظرےاتی سمر سکول کے سولہوےں روز طلباو طالبات سے خطاب کے دوران کےا اس موقع پر تحرےک پاکستان کے سرگرم کارکن ممتاز صحافی اور چےئرمےن نظریہ پاکستان ٹرسٹ ڈاکٹر مجید نظامی، وائس چےئرمےن پروفےسر ڈاکٹر رفےق احمد، تحرےک پاکستان ورکرز ٹرسٹ کے چےئرمےن کرنل (ر) جمشید احمد ترےن ، سےنئر کالم نگار و ممتاز دانشور ڈاکٹر صفدر محمود اور نظریہ پاکستان ٹرسٹ کے سےکرٹری شاہد رشےد بھی موجود تھے نظرےاتی سمر سکول کا اہتمام نظریہ پاکستان ٹرسٹ نے تحرےک پاکستان ورکرز ٹرسٹ کے اشتراک سے کےا ہے جو اےک ماہ تک جاری رہے گا پاکستان سے پےار کرو کا ماٹور رکھنے والے اس نظرےاتی سمر سکول مےں 6سے 13 سال کی عمر کے طلباءو طالبات کو اعلیٰ تعلےمی قابلیت کے حامل اساتذہ کی زیر نگرانی نظریہ پاکستان سے ہم آہنگ نصاب اور نہاےت دلچسپ و عام فہم انداز مےں ذہنی و جسمانی نشوونما کے مواقع قراہم کئے جا رہے ہےں پروگرام کے آغاز پر نظرےاتی سمر سکول کے طلبا و طالبات نے تلاوت کلام پاک، نعت رسول مقبول اور قومی ترانہ پےش کےا طہ جاوےد نے بارگاہ رسالت ماب مےں نذرانہ عقےدت پےش کےا پروگرام کی کمپےئرنگ کے فرائض مرےم کمال صوفی نے انجام دئےے مجےب الرحمن شامی نے کہا کہ آپ خوش قسمت بچے ہےں کہ اتنے اچھے ماحول مےں تعلےم حاصل کر رہے ہےں ےہاں سٹےج پر بےٹھے تمام افرادمحنت کش گھرانوں سے تعلق رکھتے ہےں لیکن اپنی محنت کے بل بوتے پر آج اس مقام تک پہنچے ہےں آپ عہد کرےں کہ ہم ان بچوں کےلئے بھی کام کرےں گے جو تعلےم حاصل کرنے سے محروم ہےں آج اس بات کی ضرورت ہے کہ نئی نسل کو آگاہ کا جائے کہ پاکستان کیوں اور کےسے بنا قےام پاکستان سے قبل مسلمانوں کی حالت بہت بڑی تھی ہندوﺅں اور مسلمانوں کا پانی الگ الگ تھا کاروبار اور تمام وسائل پر ہندوﺅں کا قبضہ تھا ہندو مسلمانوں کو اچھوت سمجھتے تھے اور مسلمان کسمپرسی اور غلامی کی زندگی بسر کر رہے تھے ان حالات مےں مسلمانان برصغیر نے الگ وطن کی تحرےک چلائی اور پاکستان حاصل کر لیا آج اللہ تعالی کے فضل و کرم سے ہم آزاد ہےں اور ہمارے پاس وسائل بھی موجود ہےں انہوں نے کہ یہ حقےقت ہے کہ پاکستان اےسا پاکستان نہےں بن سکا جس کا خواب قائد اعظم نے دےکھا تھا لیکن پاکستان نے بہت کچھ حاصل کےا ہے پاکستانی کم وسائل کے باوجود نےا بھر مےں پاکستان کا نام روشن کر رہے ےں آج صورتحال یہ ہے کہ پاکستانیوں کی صلاحیتوں سے فائدہ اٹھا کر دےگر ممالک نے بھی ترقی کی ہے آج پاکستان کے پاس دنیا کی بڑی اور بہترین فوج موجود ہے جس کا شمار اپنی تنظےم اور ڈسپلن کی وجہ سے دنےا کی بہترین افواج مےں ہوتا ہے پاکستان اےٹمی قومت کا حامل ملک ہے ہمارے پاس مےزائل ہےں اور ہمارا دفاع ناقابل تسخیر ہو چکا ہے بہت سے مسلم وغیر مسلم ممالک اےسے ہےں جن کے پاس ہم سے بہت زےادہ وسائل ہےں لیکن وہ اےٹمی صلاحیت سے محروم ہےں

مجیب الرحمن شامی

مزید :

صفحہ آخر -