پاکستان کیخلاف امریکہ بھارت گٹھ جوڑ ملکی سلامتی کیلئے شدید خطرہ بن گیا، منور حسن

پاکستان کیخلاف امریکہ بھارت گٹھ جوڑ ملکی سلامتی کیلئے شدید خطرہ بن گیا، ...

  

      لاہور( این این آئی)امیر جماعت اسلامی پاکستان سید منورحسن نے پاکستان کے خلاف امریکہ بھارت گٹھ جوڑ کو پاکستان کی سلامتی کے لیے شدید خطرہ قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ امریکی وزیر خارجہ جان کیری کی طرف سے افغانستان سے امریکی انخلا کے بعد افغانستان میں ہونے والے انتخابات میں بھارت کو فعال کردار ادا کرنے کی دعوت اور کم از کم ڈیڑھ لاکھ بھارتی افواج کی افغانستان میں تعیناتی کا مطالبہ دراصل خطے کے امن کو تہہ و بالا کرنے اور پاکستان کے خلاف بھارتی عزائم کی کھل کر حمایت و سرپرستی کے متراد ف ہے ۔اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہاکہ پاکستان کے عاقبت نااندیش حکمرانوں نے امریکی جنگ میں شامل ہو کر ملک کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا ہے ۔ پاکستان کے موجودہ حکمران بھی مشرف اور زرداری کے نقش قدم پر چل رہے ہیں اور امریکی ایما پر بھارت کو ” بڑا بھائی “ تسلیم کرنے پر تیار نظر آتے ہیں جبکہ بھارت پاکستان کے خلاف اپنے ناپاک عزائم کی تکمیل کے لیے ہر وقت موقع کی تلاش میں رہتاہے ۔ سید منورحسن نے کہاکہ پاکستان کو افغان جنگ کا بھاری نقصان برداشت کرناپڑا ۔ دہشتگردی کے خلاف خالص امریکی جنگ میں ہمارے پچاس ہزار سے زائد شہری لقمہ اجل بن گئے ۔ہماری معیشت تباہ ہو گئی لیکن حکمران امریکی اعتماد حاصل کرنے میں ناکام رہے۔ امریکہ پاکستان کی سا لمیت کے خلاف بھارتی و اسرائیل سازشوں کی سرپرستی کرتاہے ۔انہوں نے کہاکہ 2014 ءمیں افغانستان چھوڑنے سے پہلے امریکہ بھارت کو افغانستان میں اپنا قائم مقام بنانا چاہتاہے ۔بھارت کی ڈیڑھ لاکھ فوج کی افغانستان میں تعیناتی کی باتیں ہورہی ہیں ۔ بھارت کی افغانستان میں فوج کی تعیناتی سے پاک افغان سرحد غیر محفوظ ہو جائے گی اور بھارتی ریشہ دوانیاں بڑھ جائیں گی۔ پاکستان کے خلاف امریکی سازشوں میں افغان صدر حامد کرزئی بھی پوری طرح شریک ہیں اسی لیے وہ افغان فوج کو تربیت کے لیے پاکستان کی بجائے بھارت بھجوانے کے معاہدے کر رہے ہیں ۔ انہوں نے حکمرانوں کو خبردار کیا کہ وہ امریکی چالوں سے ہوشیار رہیں ، جان کیری کے بیان پر سخت ردعمل کا بھی اظہار کریں اور امریکہ پر واضح کردیں کہ بھارت کو افغانستان میں کردار دینے سے خطے میں امن قائم نہیں ہو سکے گا۔

منو حسن

مزید :

صفحہ آخر -