9/11 کے بعد امریکہ میں دہشتگردی کے کتنے واقعات میں مسلمان ملوث پائے گئے اور کتنوں میں غیر مسلم؟جواب آپ کی آنکھیں کھول دے گا

9/11 کے بعد امریکہ میں دہشتگردی کے کتنے واقعات میں مسلمان ملوث پائے گئے اور ...
9/11 کے بعد امریکہ میں دہشتگردی کے کتنے واقعات میں مسلمان ملوث پائے گئے اور کتنوں میں غیر مسلم؟جواب آپ کی آنکھیں کھول دے گا

  

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) دنیا بھر کے غیرمسلم معاشروں نے باہمی گٹھ جوڑ اور پراپیگنڈے سے اسلام اور دہشت گردی کو باہم اس طرح جوڑ دیا ہے کہ ایک تاثر پیدا ہو گیا ہے کہ دہشت گرد ہمیشہ مسلمان ہی ہوتے ہیں۔مسلمانوں کی طرف سے ہمیشہ یہ استدلال کیا جاتا رہا کہ دہشت گردی مذہبی مسئلہ نہیں ہے، اگر کوئی مسلمان اس کا ارتکاب کر سکتا ہے تو دیگر مذاہب کے لوگ بھی اس میں ملوث ہو سکتے ہیں۔ بالآخر دنیا بھر کو دہشت گردی اور دہشت گردوں کے پیچھے لگانے والے امریکہ نے ہی اس کا اعتراف کر لیا ہے کہ اس کے مقامی شہری مسلمانوں سے زیادہ خطرناک دہشت گرد ہیں۔

نائن الیون کے بعد امریکہ میں مسلسل دہشت گردی کے چھوٹے واقعات ہوتے آ رہے ہیں ۔امریکی تحقیقاتی ادارے نیوامریکہ کے مطابق نائن الیون کے بعد اب تک ددہشت گردی کے واقعات میں 64افراد ہلاک ہو چکے ہیں، ان میں سے 48افراد کو غیر مسلم دہشت گردوں نے ہلاک کیا جبکہ صرف 26افراد خودساختہ مسلمان شدت پسندوں کی گولیوں کا نشانہ بنے۔حال ہی میں چارلسٹن سیاہ فام امریکیوں کی ہلاکتوں میں بھی گورے نسل پرست ملوث تھے۔نیو امریکہ کے مطابق نائن الیون کے بعد کیے گئے حملوں میں سے 19غیرمسلم دہشت گردوں کی طرف سے کیے گئے جبکہ مسلم شرپسندوں کی طرف سے صرف7حملے کیے گئے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -