پاکستان میں اسلامی بینکاری تیزی سے فروغ پانا شروع ہو گئی

پاکستان میں اسلامی بینکاری تیزی سے فروغ پانا شروع ہو گئی

  

لاہور(کامرس رپورٹر)پاکستان میں اسلامی بینکاری تیزی سے فروغ پانا شروع ہو گئی اور اس وقت ملک میں کل بینکاری کا 20فیصد اسلامی بینکاری ہو چکی ہے ۔ نیشنل بنک کے ایگزیکٹو وائس پریڈیذنٹ اور میڈیا ہیڈ ابن حسن نے صحافیوں کے اعز از میں دیئے گئے افطار ڈنر کے بعد میڈیا سے گفًتگو کرتے ہوئے بتایا کہ بنک نے این بی پی اعتمادکے نام سے اسلامی بینکاری کا آغاز 2013ء سے کیا تھا اور اس وقت مختلف شہروں میں نیشنل بنک کی اسلامی بینکاری کی کل برانچیں 50ہیں جو اس سال کے آخر تک بڑھ کر 100برانچیں ہو جائیں گی ۔نیشنل بنک دیہی علاقوں میں بھی اسلامی بینکاری کی برانچیں کھول رہا ہے جبکہ بنک کی روایتی برانچوں کی تعداد 1300سے زائد ہیں جن میں اکثریتی برانچیں آن لائن ہیں ۔اسلامی بینکاری کے صارفین کو بھی اے ٹی ایم کارڈ کی سہولت فراہم کر دی گئی ہے ۔

انہوں نے ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ این بی پی اعتماد سکیم عوام میں تیزی سے مقبول ہو رہی ہے جو اپنے صارفین کو پیمنت آرڈر کا جاری کرنا،بینک ڈرافٹس،ترسیلات زر،گورنمنٹ کلیکشن اور یوٹیلیٹز بلوں کی ادائیگی کی بھی سہولت فراہم کر رہی ہے ۔انہوں نے بتایا کہ نیشنل بنک اسلامی بینکاری کو تیزی سے آگے بڑھا رہا ہے اور اسلامی بینکاری کے کھاتہ داران کی تعداد میں اضافے کی وجہ سے اسلامی بینکاری کے ڈیپازٹس میں نمایاں اضافہ ہو رہا ہے جس سے بنک کا منافع اور فی حصص آمدنی بھی بڑھے گی۔ابن حسن نے بتایا کہ این بی پی اعتماد نے صارفین کا اعتماد جیت لیا ہے اور پاکستان نے صارفین کو شریعت سے ہم آہنگ ،بنکنگ کے مؤثر اور جدید طریقوں سے روشناس کروا کے بنکنگ کے صحیح تصور کو اجاگر کیا ہے ۔

مزید :

کامرس -