رمضان بازاروں میں چیک اینڈ بیلنس کا فقدان،مہنگائی کے ڈیرے

رمضان بازاروں میں چیک اینڈ بیلنس کا فقدان،مہنگائی کے ڈیرے

  

لاہور (وقائع نگار )ضلعی حکو مت کے زیر اہتمام صو بائی دارالحکو مت میں لگائے جانے والے رمضان بازاروں میں چیک اینڈ بیلنس کے فقدان کے باعث مصنو عی مہنگائی نے ڈیرے ڈال رکھے ہیں ۔جہاں پر مارکیٹ کمیٹی کی جانب سے نرخ نامے جاری کرنے کے باوجو د سٹال ہو لڈرز مہنگے دامو ں اشیاء فروخت کررہے ہیں ۔ گزشتہ روز دہلی گیٹ رمضان بازار سروے میں صارفین مہنگائی کے خلاف پھٹ پڑے ۔جہاں پر مارکیٹ کمیٹی کے اہلکار غائب اور پھل فروش مقررہ قیمت سے زائد پراشیاء فروخت کرکے شہریو ں کا خو ن نچوڑتے رہے ۔شہریو ں نے رمضان بازار کو بے سود قرار دیتے ہو ئے مثبت اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کیا ہے پاکستان سے گفتگو کرتے ہو ئے مریم اور مسز علی نے کہا کہ حکو مت نے رمضان بازارو ں کا انعقاد عوام کو بے و قو ف بنانے کے لیے کیا ہے جہاں پر چند ایک سبزیو ں اور پھلو ں کے دیگر اشیاء کے سٹالز نہ لگائے گئے ہیں ۔انھو ں نے کہا کہ پنجاب حکو مت کی جانب سے اربو ں روپے کی سبسٹڈی کا عوام کو کوئی فائدہ نہیں مل رہا ہے فرح اور مسز عبدالحمیدنے کہا کہ مہنگائی کے اس دور میں رمضان بازار اہمیت کے حامل ہیں جہاں پر اشیاء عام مارکیٹ کی نسبت سستی میسر ہو رہی ہیں۔انھو ں نے کہا کہ ضلعی حکو مت اوپن مارکیٹ میں اشیا ء کی قیمتو ں پر چیک اینڈ بیلنس کے لیے سخت اقدامات اٹھائے ۔مسز کامران اور مسز عمران نے کہا کہ ضلعی حکو مت کو چائیے کہ رمضان بازاروں میں عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کرنے کے لیے اشیاء کی کو الٹی کو ملحو ظ خاطر رکھے ضلعی حکو مت رمضان المبارک میں مصنو عی مہنگائی کے جن کو بو تل میں بندکرنے میں مکمل ناکا م ہو چکی ہے ۔فاخرہ ، کلثوم اور ہما علی نے کہا کہ عام مارکیٹ کی نسبت یہاں پر اشیاء سستی ہیں تاہم کو الٹی کو مزید بہتر بنانے کی ضرورت ہے

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -