کوآپریٹو سوسائٹیوں میں ماڈل الیکشن رولز پر عملدرآمد سوالیہ نشان

کوآپریٹو سوسائٹیوں میں ماڈل الیکشن رولز پر عملدرآمد سوالیہ نشان

  

(لاہور/عامر بٹ سے) محکمہ امدادِ باہمی کے ڈسٹرکٹ آفیسر لاہور کی جانب سے صوبائی دارالحکومت میں واقع کو آپریٹو سوسائٹیوں میں ماڈل الیکشن رولز پر عمل درآمد کروانے اور زیر التواء ماڈل الیکشن نہ کروانے کے حوالے سے دائر کیے جانے والیتحریری ریفرنس ڈپٹی اور اسسٹنٹ رجسٹراروں نے ردی کی ٹوکری میں پھینک دیے10 ماہ گزر جانے کے بعد بھی نہ تو ماڈل الیکشن رولز پر عمل درآمد کروانے کے حوالے سے جاری کی گئی ہدایت پر کوئی کارروائی عمل میں لائی گئی نہ کئی کئی سالوں سے زیر التوا ماڈل الیکشن کروائے جا سکے جس سے محکمہ کو آپریٹو کے انتظامی عہدوں پر براجمان افسران کی کارکردگی سوالیہ نشان بن کر رہ چکی ہے مزید معلوم ہوا ہے کہ محکمہ امدادِ باہمی کے ڈسٹرکٹ آفیسر کی جانب سے 4اکتوبر2013 کو ریفرنس نمبر 6960-67-DOCL/Hکے ذریعے صوبائی دارالحکومت میں تعینات تمام ڈپٹی رجسٹرار، اسسٹنٹ رجسٹراروں کو ہدایت کی گئی کہ وہ ماڈل الیکشن رولز کے مطابق تمام کو آپریٹو سوسائٹیوں میں سختی سے عمل درآمد کروائیں اور جن کوآپریٹو سوسائٹیوں میں عرصہ کئی کئی سالوں سے ماڈل الیکشن نہیں کروائے گئے ان کی فہرست مرتب کر تے ہوے فوری الیکشن کروائے جائیں تاہم10ماہ کا عرصہ گزر جانے کے بعد بھی ڈسٹرکٹ آفیسر لاہور کی تحریری ہدایت پر نہ تو کسی ڈپٹی رجسٹرار نے عمل درآمد کیا ہے اور نہ کسی اسسٹنٹ رجسٹرار نے محکمہ کے بائی لاز کے مطابق کام کرنے کو ترجیح دی ہے بلکہ اس ریفرنس کا مذاق اڑایا گیا اور تحریری آرڈر لکھنے والے رجسٹرار کو دبے لفظوں تنقید کا نشانہ بنایا گیا ہے کو آپریٹو ذرائع کا کہنا ہے کہ رجسٹرار کے اس ریفرنس کو ہوا میں اڑا دیا گیا ہے اور اس حوالے سے آج تک کوئی رپورٹ مرتب نہیں کی جا سکی ہے کیوں کہ اس میں بعض افسران کے مفادات شامل ہیں دوسری جانب رجسٹرار پنجاب کا کہنا ہے کہ اس حوالے سے وہ نوٹس لیں گے اور کوتاہی برتنے والے اسٹاف کے خلاف محکمانہ کارروائی کی جائے گی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -