انتشار پھیلانے والی مساجد کو ایک ہفتے میں بند کر دیا جائے گا :حبیب الصید

انتشار پھیلانے والی مساجد کو ایک ہفتے میں بند کر دیا جائے گا :حبیب الصید
انتشار پھیلانے والی مساجد کو ایک ہفتے میں بند کر دیا جائے گا :حبیب الصید

  

تیونس(مانیٹرنگ ڈیسک)تیونس کے وزیراعظم نے کہاہے کہ وہ ملک میں انتشار پھیلانے والی 80 مساجد کو ایک ہفتے کے اندر بند کر دیں گے۔پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تیونس کے وزیراعظم حبیب الصید نے حکومتی کنٹرول سے باہر کچھ مساجد ’زہر ‘پھیلا رہی ہیں اور انہیں ایک ہفتے میں بند کردیا جائےگا ۔

انہوں نے کہا کہ کچھ مساجد سے پراپیگنڈا اور دہشت گردی کا زہر پھیلایا جارہاہے وزارت داخلہ ان مساجد کو بند کر دے گی۔تیونس کے وزیراعظم کی جانب سے یہ اعلان سیاحتی مقامم سوسہ میں ہوٹلوں پر حملے کے بعد سامنے آیا جس میں 39افراد ہلاک جبکہ 36سے زائد افراد زخمی بھی ہوئے تھے ۔

ذرائع کا کہناہے کہ تیونس حملے میں ہلاک ہونے والے افراد میں سے سب سے زیادہ تعدا د برطانوی شہریوں کی ہے اور دوسری جانب اس واقعے کے بعد سیاح بڑی تعداد میں ملک چھوڑ کر جا ررہے ہیں جس کے بعد حکومت کی جانب سے سیاحتی مقامات پر اضافی سکیورٹی تعینات کر نے کافیصلہ کیا گیاہے ۔

واضح رہے کہ تیونس میں ہونے والے حملے کی ذمہ داری داعش نے قبول کرلی ہے ۔

مزید :

بین الاقوامی -