پاکستان میں فیس بک پر مکمل پابندی لگانے کیلئے قانونی چارہ جوئی کا آغاز

پاکستان میں فیس بک پر مکمل پابندی لگانے کیلئے قانونی چارہ جوئی کا آغاز

کوئٹہ (این این آئی) معروف سوشل میڈیا ویب سائٹ بھارتی لابی کے ہاتھوں یرغمال ‘ پاکستانیوں کیخلاف غیر قانونی اقدامات ‘فیس بک انتظامیہ کی پاکستانی اداروں اور صارفین کیخلاف ہندوستانی لابی کے دباؤ میں غیر قانونی اقدامات ‘ پاکستانی صارفین کے اکاؤنٹس اور پیجز بلاک کرنے پر قانونی چارا جوئی کا آغاز کردیا گیا۔ ممتاز ماہر قانون اور بلوچستان ہائیکورٹ بار کے سیکرٹری خزانہ امین اللہ غرشین کے توسط سے فیس بک انتظامیہ کو قانونی نوٹس ارسال ‘ 10روز میں معذرت اور تمام بلاک اکاؤنٹس اور پیجز بحال کرنے کے ساتھ ساتھ پاکستانی صارفین کے مسائل کے حل کیلئے فوری طور پر پاکستان میں فیس بک کے دفاتر کھولنے کا مطالبہ۔ اگر فوری طور پر فیس بک نے مطالبات پورے نہ کئے تو معزز عدالت عالیہ سے رجوع کرکے پاکستان میں فیس بک بند کرنے اور بلاک پیجز کو ہرجانہ ادا کرنیکی درخواست کی جائیگی۔نوٹس پی ٹی اے کے چیئرمین کو بھی ارسال کیا گیا ہے جس میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ پی ٹی اے پاکستانی صارفین کے حقوق کے دفاع میں ناکام رہا ہے لہذا فوری پی ٹی اے فیس بک حکام سے رابطہ کرکے مسائل حل کرے اور انہیں پاکستان میں دفاتر کھولنے کا حکم دیں بصورت دیگر جب تک مسائل حل نہیں ہوتے پی ٹی اے پاکستان بھر میں فیس بک کی سروس بند کردے ۔قانونی نوٹس ایف آئی اے کے ڈی جی کو بھی ارسال کیا گیا ہے جس میں موقف اپنا یا گیا ہے کہ سائبر کرائم ایکٹ کے تحت اگر فیس بک انتظامیہ غیر قانونی طور پر کسی صارف کیخلاف کوئی کارروائی کرتی ہے تو یہ ایک جرم ہے لہذا یف آئی اے فوری طور پر فیس بک انتظامیہ کیخلاف قانونی کارروائی کا آغاز کرے۔قانونی نوٹس وفاقی سیکرٹری خزانہ کو بھی ارسال کیا گیا ہے جس میں موقف اپنا یا گیا ہے کہ فیس بک انتظامیہ اشتہارات کے نام پر روزانہ پاکستانی صارفین سے کروڑو ں روپے لیتی ہے لہذا تمام بینکوں کو حکم دیا جائے کہ جب تک فیس پاکستان میں دفتر نہیں کھولے گا تب تک کسی پاکستانی بینک اکاؤنٹ یا کارڈ سے فیس بک کو پیمنٹ کی سروس بند کی جائے ۔

فیس بک

مزید : علاقائی