چیف جسٹس کی برہمی کے برد ایڈیشنل سیشن جج لاڑکانہ گل ضمیر سولنگی مستعفی

چیف جسٹس کی برہمی کے برد ایڈیشنل سیشن جج لاڑکانہ گل ضمیر سولنگی مستعفی

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک)رواں ہفتے لاڑکانہ میں سیشن کورٹ کے دورے کے موقع پر چیف جسٹس ثاقب نثار کی طرف سے برہمی کا سامنا کرنیوالے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج گل ضمیر سولنگی نے استعفیٰ دیدیا۔23 جون کو چیف جسٹس نے لاڑکانہ سیشن کورٹ کے دورے کے دوران میز پر ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج گل ضمیر سولنگی کا موبائل فون دیکھ کر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے موبائل اٹھا کر پٹخ دیا اور تبادلے کا بھی حکم دیدیا تھا۔ذرائع کے مطابق ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج گل ضمیر سولنگی کی جانب سے استعفیٰ رجسٹرار سندھ ہائیکورٹ کو بھجوایا گیا۔سوشل میڈیا پر گردش کرنے والے استعفے کے متن کے مطابق ’’میں 20 مارچ 2017 ء سے لاڑکانہ میں ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کے عہدے پر کام کر رہا ہوں، چیف جسٹس نے عدالتی کارروائی کے دوران میری عدالت کا دورہ کیا اور برہمی کا اظہار کیا'۔گل ضمیر سولنگی کے مطابق چیف جسٹس کے دورے کی ویڈیو الیکٹرانک، پرنٹ اور سوشل میڈیا پر دکھائی گئی، جس سے میری ساکھ بری طرح متاثر ہوئی۔جج گل ضمیر سولنگی کا مزید کہنا تھا کہ ایسے حالات میں، میں اپنی نوکری جاری نہیں رکھ سکتا، لہٰذا استعفیٰ دے رہا ہوں۔دوسری جانب ذرائع کا کہنا ہے کہ ایڈیشنل سیشن جج گل ضمیرسولنگی نے اپنا استعفیٰ سیشن جج کے حوالے کردیا اور سیشن جج کسی بھی وقت گل ضمیرسولنگی کا استعفیٰ رجسٹرار کو بھیج سکتے ہیں۔ذرائع نے بتایا کہ قواعد کے مطابق ایڈیشنل سیشن جج رجسٹرر سے براہ راست خط و کتابت کے مجاز نہیں۔علاوہ ازیں صدر لاڑکانہ ہائیکورٹ بار نے بھی ضمیر سولنگی کے استعفے کی تصدیق کی ہے۔

ضمیر سولنگی مستعفی

مزید : صفحہ اول