تمام جماعتیں کراچی کی زیادہ سے زیادہ نشستیں حاصل کرنے کی خواہشمند

تمام جماعتیں کراچی کی زیادہ سے زیادہ نشستیں حاصل کرنے کی خواہشمند

کراچی: تجزیہ مبشر میر

مسلم لیگ (ن) کراچی سے الیکشن مہم شروع کرچکی ہے ۔صدر مسلم لیگ (ن) میاں شہباز شریف کراچی کے مختلف شعبہ ہائے زندگی کے افراد سے ملاقاتیں کررہے ہیں ۔اس سے لگتا ہے کہ کراچی کی 21نشستیں جن کے بارے میں سوچنا بھی مشکل دکھائی دیتا تھا اب اس میں سے زیادہ سے زیادہ نشستیں حاصل کرنے کی خواہش تمام جماعتوں کو پیدا ہوگئی ہے جس میں مسلم لیگ (ن) بھی شامل ہے ۔میاں شہباز شریف نے صحافیوں سے خصوصی ملاقات میں اپنی ذاتی رائے سے آگاہ کرتے ہوئے بتایاکہ آئندہ حکومت ،قومی حکومت ہونی چاہیے ۔اس سے اندازہ ہوتا ہے کہ وہ خود بھی اس نتیجے پر پہنچ چکے ہیں کہ کسی سیاسی جماعت کے لیے سادہ اکثریت حاصل کرنا بھی مشکل دکھائی دیتا ہے ۔یہ بات حیران کن ہے کہ تمام سیاسی جماعتیں اپنی انتخابی مہم میں دیگر مسائل پر بات کررہی ہیں لیکن آئندہ خارجہ پالیسی کیا ہوگی اس پر کھل کر اظہار خیال کرنے سے قدرے اجتناب کررہی ہے ۔سیاسی قائدین کو بھی خارجہ پالیسی کا میدان مشکل دکھائی دیتا ہے ۔یہ بات اس لحاظ سے بھی اہم ہے کہ آئندہ حکومت کو بھارت کے حوالے سے پالیسی واضح کرنا ہوگی کیونکہ گزشتہ دور حکومت میں وزیر خارجہ نہیں تھا اور پالیسی بھی گومگو کا شکار تھی ۔میاں نواز شریف پر کھل کر تنقید ہوتی رہی لیکن وہ بھارت کے ساتھ ایشوز پر خاموش رہے ۔کلبھوشن کے مستقبل کا فیصلہ کرنا بھی آئندہ حکومت کا بڑا امتحان ہوگا ۔صدر مسلم لیگ (ن) میاں شہباز شریف نے کالا باغ ڈیم نہ بنانے کا اعلان کرکے سندھ کے چند لوگوں کو خوش کرنے کی کوشش کی ہے تاکہ انہیں سندھی ووٹرز کی حمایت مل سکے اور اپنی پارٹی کے اندر بھی سندھی راہنماؤں کو ناگواری نہ ہو لیکن کیا بھاشا ڈیم ،کالا باغ ڈیم کا نعم البدل ہے اس کا جواب کسی کے پاس نہیں۔ میاں شہباز شریف اس بات سے بھی آگاہ ہونگے کہ اس وقت پنجاب میں کالا باغ ڈیم بناؤ مہم سوشل میڈیا پر چل رہی ہے ۔ان کے اس بیان سے پنجاب کا ووٹر کس حد تک ناراض ہوگا اس کا اندازہ الیکشن میں ہوگا ۔

تجزیہ مبشر میر

مزید : تجزیہ