پی ڈی اے کو نجی یونیورسٹی میں بے جا مداخلت سے روک دیا گیا

پی ڈی اے کو نجی یونیورسٹی میں بے جا مداخلت سے روک دیا گیا

پشاور(نیوزرپورٹر)سول جج پشاور سعیدہ اخترنے پی ڈی اے حکام کو نجی یونیورسٹی میں بے جامداخلت سے روک دیاہے اورڈی جی پی ڈی سے جواب مانگ لیاہے عدالت عالیہ کے فاضل بنچ نے یہ احکامات گذشتہ روز شمائل احمدبٹ ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائردعوی پرجاری کئے اس موقع پر عدالت کوبتایاگیاکہ پی ڈی اے حکام اقراء نیشنل یونیورسٹی حیات آباد پربے جاچھاپے مارہے ہیں اورانہیں یونیورسٹی کے باہرسے بیرئیرہٹانے اوریونیورسٹی میں سوئمنگ پول اورجمنزیم ختم کرنے کوکہہ رہے ہیں ا س موقع پران کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ سوئمنگ پول اورجمنزیم یونیورسٹی کی حدود کے اندر قائم کئے گئے ہیں اوریہ صرف طلباء کے استعمال کے لئے ہیں اورپی ڈی اے کے ایک ڈائریکٹرنے ذاتی عنادکامسئلہ بنارکھاہے جس کاایک بیٹاامتحان میں فیل ہواتھاعدالت نے پی ڈی اے کو یونیورسٹی میں بے جامداخلت سے روک دیا اور ڈی جی پی ڈی اے سے جواب مانگ لیا۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر