جنوبی پنجاب میں 25لاکھ سے زائد نوجوان نشے کے عادی ہیں‘ جمشید دستی

جنوبی پنجاب میں 25لاکھ سے زائد نوجوان نشے کے عادی ہیں‘ جمشید دستی

جتوئی (نمائندہ پاکستان) عوامی راج ویلفیئر آرگنائزیشن کے زیر اہتمام (بقیہ نمبر54صفحہ12پر )

عالمی دن برائے انسداد منشیات کے سیمینارمیں خصوصی طور پر ضلع ڈیرہ غازی خان اور مظفرگڑھ میں منشیات انسداد کے لئے کافی حد تک کام کیا ہے منشیات کے خاتمے اور نشے کے عادی افراد کے علاج کیلئے ادارہ عوامی راج ویلفیئر آرگنائزیشن کی خدمات قابل تحسین ہیں ان خیالات کا اظہار انسداد برائے منشیات کے عالمی دن کے موقع پرسرپرست اعلیٰ اور مہمان خصوصی جمشید احمد دستی نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ منشیا ت ایک موذی مرض ہے اس کا تدارک اور اس کے خاتمے اور نشے کے عادی افراد کیلئے RHCسینٹر میں مفت طبی سہولیات ملنی چاہیں ۔محکمہ ایکسائز اور نارکو ٹیکس کنٹرول کے محکموں پر زور دیا کہ بر وقت کارروائی کر کے منشیا ت کو روک سکتے ہیں اس کے علاوہ حکومت پاکستان نشے کے عادی افراد کو مفت طبی سہولیات دے کر علاج کرے ۔جنوبی پنجاب میں نشے کے عادی افراد کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے ۔پندرہ سے تیس سال کے نو جوان روزگار نہ ہونے کی وجہ سے نشے کے عادی بن رہے ہیں ۔جنوبی پنجاب میں پچیس لاکھ سے زائد نوجوان نشے کے عادی ہو چکے ہیں ۔اس کا علاج و معالجہ کروانا حکومت کی ذمہ داری ہے ۔26جو ن عالمی دن برائے انسداد منشیات کے حوالے سے ڈسٹرکٹ کوآرڈینیٹر اینٹی نارکوٹیکس فورس ظفر اقبال گرمانی نے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ نشہ ایک موت ہے اس سے جتنا دور رہا جائے انسانی جانیں بچائی جا سکتی ہیں اور انہوں نے کہا کہ ڈی ایچ کیو ہسپتال مظفر گڑھ میں نشے کے عادی افراد کیلئے سینٹر بنایا جائے تاکہ نشے جیسی موذی مرض سے بچا جا سکے اس موقع پر عوامی راج ویلفیئر آرگنائزیشن کی کوششوں اور سر پرست اعلیٰ جمشید احمد دستی کو خراج تحسین پیش کیا او ر ان کی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر