’میں نے بال صاف کرنا چھوڑ دئیے ہیں کیونکہ اب۔۔۔‘ داڑھی والی خاتون نے انتہائی حیران کن بات کہہ دی

’میں نے بال صاف کرنا چھوڑ دئیے ہیں کیونکہ اب۔۔۔‘ داڑھی والی خاتون نے ...
’میں نے بال صاف کرنا چھوڑ دئیے ہیں کیونکہ اب۔۔۔‘ داڑھی والی خاتون نے انتہائی حیران کن بات کہہ دی

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) ’پولی سیسٹک اووری سنڈروم‘(Polycystic Ovary Syndrome)ایسی بیماری ہے جس میں خواتین کے چہرے اور جسم پر مردوں کی طرح بال اگ آتے ہیں۔ امریکی ریاست ورجینیا کی نووا گیلیکشا نامی یہ خاتون بھی اس بیماری کا شکار تھی اور اسے مردوں کی طرح اپنی شیو بنانی پڑتی تھی تاہم اس نے گزشتہ کچھ عرصے سے شیوبنانی چھوڑ دی ہے اور اب شیو نہ بنانے کے متعلق ایسی حیران کن بات کہہ دی ہے کہ آدمی سن کر دنگ رہ جائے۔ ڈیلی سٹار کے مطابق نووا کا کہنا ہے کہ ”میں پہلے لوگوں سے چھپانے کے لیے اپنی شیو بناتی تھی۔ میں چاہتی تھی کہ میں عام لڑکیوں کی طرح نظر آﺅں۔ میں خوفزدہ رہتی تھی کہ داڑھی کے ساتھ مجھے کوئی مرد قبول نہیں کرے گا۔ اب میرا یہ خوف دور ہو گیا ہے۔ مجھے ایسا شریک حیات مل گیا ہے جو مجھے داڑھی کے ساتھ بھی پسند کرتا اور مجھ سے محبت کرتا ہے، چنانچہ میں نے اپنی شیو کرنی چھوڑ دی ہے۔“

رپورٹ کے مطابق شیو ترک کرنے کے بعد اب نووا کی مردوں کی طرح کافی لمبی داڑھی اور مونچھیں ہیں اور دیکھنے سے وہ مرد ہی لگتی ہے۔ نووا نے اپنی اس حالت کے بارے میں بات کرتے ہوئے بتایا کہ ”کم عمری میں ہی میرے چہرے پر بال تھے جو 12سال کی عمر کو پہنچ کر سیاہ اور گھنے ہونے شروع ہو گئے۔ جس پر میں نے خفیہ طور پر ہی شیو کرنا شروع کر دی۔ اس چیز کے متعلق میں نے اپنے ماں باپ کو بھی نہیں بتایا تھا۔ انہیں بھی کئی سال بعد پتا چلا کہ میں اس مرض کا شکار ہوں۔“واضح رہے نووا واحد لڑکی نہیں ہے جو اس مرض میں مبتلا ہے۔ دنیا میں اور بھی کئی خواتین اس کا شکار ہیں جن میں سب سے زیادہ شہرت بھارتی نژاد برطانوی لڑکی ہرنام کور کو حاصل ہوئی۔ وہ بھی شیو نہیں بناتی۔ اس کی بھی مردوں کی طرح داڑھی اور مونچھیں ہیں اور اس پر وہ پگڑی بھی باندھتی ہے اور اپنے اس حلیے کے ساتھ ماڈلنگ بھی کرتی ہے۔نووا کا کہنا ہے کہ ”ہرنام کور میری آئیڈیل ہے جس نے اس مرض کے باوجود ہمت نہیں ہاری اور آج کامیاب ماڈل بن چکی ہے۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی