الیکشن ایکٹ کے تحت نا اہلی بھی آئین کے آرٹیکل 62اور 63کے تحت ہی تصورہوگی:آئینی ماہر

الیکشن ایکٹ کے تحت نا اہلی بھی آئین کے آرٹیکل 62اور 63کے تحت ہی تصورہوگی:آئینی ...
الیکشن ایکٹ کے تحت نا اہلی بھی آئین کے آرٹیکل 62اور 63کے تحت ہی تصورہوگی:آئینی ماہر

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)معروف قانون دان فروغ نسیم نے کہا ہے کہ الیکشن ایکٹ 2017میں آئین کے آرٹیکل 62اور 63کا حوالہ دیا گیا ہے، ا س لئے الیکشن ٹربیونل کے جانب سے جس کوبھی نااہل قرار دیا جائیگا وہ آرٹیکل 62اور 63کے تحت ہی نا اہل ہوگا ۔

دنیا نیوز کے پروگرام ”دنیا کامران خان کے ساتھ“ میں گفتگو کرتے ہوئے فروغ نسیم نے کہا ہے کہ شاہد خاقان عباسی کے حوالے سے الیکشن ٹربیونل کا فیصلہ ایک مخصوص حلقے کیلئے ہے ۔ دوسرے حلقے سے جب تک ان کے کاغذات نامزدگی پر اعتراض کرنیوالا اس فیصلے کا حوالہ دیکر درخواست دائر نہیں کرے گا اس وقت تک دوسرے حلقے میں اس کا اثر نہیں پڑے گا ۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن ایکٹ2017 میں بھی آئین کے آرٹیکل 62اور 63کا حوالہ دیا گیا ہے اور اب جو بھی شخص نا اہل ہوگا وہ آئین کے ان آرٹیکلز کے تحت ہی ہوگا ۔

مزید : قومی