ٹڈی دل کو کنٹرول کرنے کیلئے پی ایس ڈی پی پراجیکٹ تشکیل

ٹڈی دل کو کنٹرول کرنے کیلئے پی ایس ڈی پی پراجیکٹ تشکیل

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)پاکستان میں ٹڈی دل کو کنٹرول کرنے کے حوالے سے این ایل سی سی کا اہم اجلاس بذریعہ وڈیو لنک منعقد ہوا۔ مرکزی حکومت کی طرف سے وفاقی وزیر براے نیشنل فوڈ سیکیورٹی فخر امام صا اور نیشنل لوکسٹ کنٹرول سنٹر کے سربراہ لیفٹننٹ جنرل معظم اعجاز نے اجلاس کی صدارت کی جبکہ خیبرپختونخوا حکومت کی طرف سے صوبائی وزیر زراعت محب اللہ خان نے صوبے کی نمائندگی کی۔ اجلاس میں چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا ڈاکٹر کاظم نیاز، سیکرٹری زراعت خیبرپختونخوا محمد اسرار، پاک فوج کے نمائندگان اور ڈائریکٹر جنرل زراعت توسیع عابد کمال نے بھی شرکت کی۔ صوبائی وزیر زراعت نے قومی سطح پر این ایل سی سی کے کردار کو سراہا اور صوبہ خیبرپختونخوا میں ٹڈی دل کو کنٹرول کرنے کے حوالے سے کیے گئے اقدامات پر تفصیلی بریفنگ دی۔ اب تک صوبہ خیبر پختونخوا میں 52 لاکھ ہیکٹر رقبے پر سروے جبکہ 61 ہزار ہیکٹر رقبے پر ٹڈی دل پر قابوپایا جا رہا ہے۔ ٹڈی دل کے کنٹرول کے لئے محکمہ زراعت کی 80 ٹیمیں سروے اور کنٹرول میں حصہ لے رہی ہیں۔ وزیر زراعت خیبرپختونخوا محب اللہ خان نے وفاقی حکومت کا شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے خیبرپختونخوا حکومت کی تجویز پر تمام صوبوں کے لیے قومی سطح پر ورلڈ بینک اور ایشین ڈیولپمنٹ بینک کے تعاون سے ٹڈی دل کو کنٹرول کرنے کے لئے ایک بڑے منصوبے پر کام شروع کیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا کہ خیبر پختونخوا کے ٹڈی دل سے متاثرہ تمام 15 اضلاع اس میں شامل کیے جائیں۔ صوبائی وزیر زراعت خیبرپختونخوا نے وفاقی حکومت سے یہ گزارش بھی کی کہ خیبرپختونخوا حکومت کو ٹڈی دل کے کنٹرول کرنے کے حوالے سے نیشنل ایکشن پلان ون میں شامل نہیں کیا گیا تھا اور خیبرپختونخوا حکومت نے ٹڈی دل کو کنٹرول کرنے کے لئے صوبائی وسائل استعمال کئے لہذا مرکزی حکومت نیشنل ایکشن پلان ٹو میں خیبرپختونخوا حکومت کو زیادہ مراعات اورامداد فراہم کرے۔ وفاقی حکومت نے صوبہ خیبرپختونخوا کی طرف سے ٹڈی دل کو کنٹرول کرنے کے حوالے سے کیے گئے اقدامات کو سراہا اور خیبر پختونخوا حکومت کی ہر ممکن مدد کی یقین دہانی کرائی

مزید :

پشاورصفحہ آخر -