مولانا ظفر علی خان ملکی تاریخ کا درخشاں باب ہیں، محمد رفیق تارڑ

  مولانا ظفر علی خان ملکی تاریخ کا درخشاں باب ہیں، محمد رفیق تارڑ

  

  

لاہور (لیڈی رپورٹر) مولانا ظفر علی خان ہمہ جہت انسان تھے جن کی زندگی عہد حاضر کے اہل سیاست و صحافت کیلئے مشعل راہ کی حیثیت رکھتی ہے۔ آپ کی ملی‘ قومی اور صحافتی خدمات ہمارے لئے قابل تقلید مثال ہیں۔ مولانا ظفر علی خان بہت بڑے عاشق رسولؐ تھے۔ آپ کا شمار تحریک پاکستان کی چند نمایاں شخصیات میں ہوتا ہے جبکہ آپ نے تحریک خلافت میں بھی بھرپورحصہ لیا۔ اسلامی اقدار کی پاسداری ہمیشہ ان کے نزدیک اولین ترجیح رہیان خیالات کااظہار تحریک پاکستان کے مخلص کارکن‘ سابق صدر اسلامی جمہوریہ پاکستان اور چیئرمین نظریہئ پاکستان ٹرسٹ محمد رفیق تارڑ نے نظریہئ پاکستان ٹرسٹ کے زیر اہتمام جاری نظریاتی سمر سکول کے 20ویں سالانہ تعلیمی سیشن (آن لائن) کے دسویں روز تحریک پاکستان کے رہنما‘بابائے صحافت‘ قادرالکلام شاعر اورآل انڈیا مسلم لیگ کے بانی رکن مولانا ظفر علی خان کی حیات وخدمات سے آگہی کیلئے منعقدہ خصوصی لیکچر کے دوران کیا۔ محمد رفیق تارڑ نے کہا کہ مولانا ظفر علی خان ہماری تاریخ کا ایک بہت درخشاں باب ہیں۔ آپ قادرالکلام شاعر، بے باک صحافی، منجھے ہوئے سیاستدان اور عدیم النظیر مترجم تھے۔ان کی شاعری باقی تمام پہلوؤں کا احاطہ کرتی ہے۔آپ برصغیر پر مسلط انگریز استعمار‘ مسلمان دشمن ہندوؤں اور قادیانیت کے خلاف مسلسل برسرپیکار رہے۔ انہوں نے اپنی شاعری کے ذریعے اسلامیان ہند میں ایک نیا جوش و ولولہ پیدا کیا۔

۔ برصغیر میں مسلمانوں کیخلاف اٹھنے والی تحریکوں کا ڈٹ کر مقابلہ کیا۔ مولانا ظفر علی خان نے ”زمیندار“اخبار کے ذریعے مسلمانوں میں بیداری کی لہر دوڑا دی۔متعدد باراخبار کی ضمانتیں ضبط ہوئیں مگر مسلمانوں کے تعاون سے دوبارہ نکلتا رہا۔ ”زمیندار“ اخبار کی ہندو اخبارات کے ساتھ چپقلش جاری رہی اور اس اخبار نے ملک میں تہلکہ مچا دیا۔بدیہہ گوئی میں مولانا ظفر علی خانؒ کا کوئی ثانی نہیں تھا۔ مولانا ظفر علی خانؒ شاعری میں سیاست اور سیاست میں شاعری فرمایا کرتے تھے۔ آپ قائداعظم محمد علی جناحؒ کے انتہائی بااعتماد ساتھی تھے۔ آپ کی قابلیت کا اعتراف کرتے ہوئے ایک مرتبہ بابائے قوم نے فرمایا تھا: ”مجھے پنجاب میں ظفر علی خان جیسے ایک دو بہادر آدمی دے دو تو میں آپ کو یقین دلاتا ہوں کہ پھر مسلمانوں کو کوئی شکست نہیں دے سکتا۔“ مولانا ظفر علی خانؒ برصغیر پر مسلط انگریز استعمار‘ مسلمان دشمن ہندوؤں اور قادیانیت کے خلاف مسلسل برسرپیکار رہے۔ مولانا ظفر علی خان اعلیٰ کردارکے حامل تھے،ہمیں ان کے نقش قدم پر چلنا چاہئے۔ اللہ تعالیٰ مولانا ظفر علی خان کی خدمات کو اپنی بارگاہ میں شرف قبولیت بخشے اور ان کے درجات بلند کر کے جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطا فرمائے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -