سوئی گیس بورڈ آف ڈائریکٹر ز انتخابات رکوانے کیلئے درخواست پرفیصلہ محفوظ

سوئی گیس بورڈ آف ڈائریکٹر ز انتخابات رکوانے کیلئے درخواست پرفیصلہ محفوظ

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے محکمہ سوئی گیس کے بورڈ اف ڈائریکٹر زکے انتخابات رکوانے کے لئے دائر درخواست میں فریقین کے دلائل مکمل ہونے پرفیصلہ محفوظ کر لیا۔جسٹس عائشہ اے ملک نے ایس این جی پی ایل کے شیئر ہولڈر وسیم مجید ملک کی درخواست پر سماعت کی۔درخواست گزرا وسیم مجید کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ بورڈ آف ڈائریکٹرز کے انتخابات میں حکومت حصہ نہیں لے سکتی۔ درخواست گزرا نے نکتہ اٹھایا کہ سرکاری افسر ایک سے زیادہ بورڑز کا ممبر نہیں سکتا۔ ایوب چودھری اور قاضی ساجد دونوں منسٹری کے افسر اور متعدد بورڈزکے رکن ہیں۔حکومت صرف بورڈ آف ڈائریکٹرز میں اپنے ڈائریکٹر نامزد کر سکتی ہے، حکومت نے ایس این جی پی ایل میں اپنے 11 نمائندے نامزد کئے جو کمپنیز ایکٹ 2017ء کی خلاف ورزی ہے، درخواست گزار نے استدعا کی مک حکومت کی طرف سے نامزد کئے گئے امیدواروں کی فہرست غیر قانونی قرار دے کر کالعدم کی جائے،وکیل نے مزید استدعا کی کہ حکومت یا حکومتی بورڈ آف ڈائریکٹرز کے نمائندوں کو ایس این جی پی ایل کے انتخابات میں حصہ لینے سے روکا جائے۔محکمہ سوئی گیس کے سب بڑے پرائیویٹ شیئر ہولڈر احمد عقیل کی طرف انوار حسین ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ درخواست قابل سماعت نہیں درخواست گزرا کے پاس الیکشن کے بعد نتائج چیلنج کرنے کا اختیار ہے لہذا عدالت درخواست ناقابل سماعت قرار دے۔

فیصلہ محفوظ

مزید :

صفحہ آخر -