ناقص پالیسیاں، فلور ملز مالکان بڑے احتجاج کیلئے تیار،حکومت کو وارننگ

  ناقص پالیسیاں، فلور ملز مالکان بڑے احتجاج کیلئے تیار،حکومت کو وارننگ

  

بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر) حکومت کی ناقص پالیسیوں نے گندم اورآٹے کے بحران کوخوددعوت دی ہے پورے پنجاب میں صرف پانچ اضلاع کی فلورملوں کوگندم کاکوٹہ جاری کرنے کافیصلہ کرکے لسانیت کی بنیادرکھی جارہی ہے پورے پنجاب کی55 فیصد گندم پیداکرنیوالے بہاولپورڈویژن کوگند م کے اجراء سے محروم کرنیوالے آٹے کے (بقیہ نمبر48صفحہ6پر)

بحران کے خودذمہ دار ہونگے حکومت نے اگراپنی پالیسی تبدیل نہ کی توپورے پاکستان میں فلورملوں کی تالہ بندی اورحکومت سے ایک بوری بھی گندم نہیں خریدیں گے۔ ان خیالات کااظہار آل پاکستان فلورملزایسوسی ایشن کے ممبرایگزیکٹو کونسل عثمان مقبول صدرچیمبر آف کامرس چوہدری جاویداقبال سابق صدر چیمبرآف کامرس چوہدری عبدالجبار، شیخ افتخار علی اوردیگرنے چیمبر آف کامرس کے دفترمیں پریس کانفرنس کے دوران کیا۔انہوں نے کہاکہ گزشتہ سال30 لاکھ میڑک ٹن گندم فلورملوں کے پاس موجود تھی اسی وجہ سے گزشتہ سال آٹے کابحران نہ آیاتھالیکن امسال حکومت نے فلورملوں کوگندم خرید کرنے کی اجازت نہ دی اورروزانہ30 بوری گندم فلورملوں کودینے کااعلان کرکے23 بوری گندم کااجراء کیااب پورے پنجاب کے پانچ اضلاع لاہور، راولپنڈی، فیصل آباد، گجرات اورملتان کوگندم دینے کافیصلہ کیاہے باقی تما م اضلاع کوگندم کے کوٹہ سے محروم رکھاگیاہے اس کے علاوہ حکومت نے1400 روپے فی40کلوگرام گندم خریدکرکے1600 روپے فی40 کلوگرام گندم جاری کرنے کاجوفیصلہ کیاہے وہ بھی زیادتی ہے انہوں نے کہاکہ اس طرح کی پالیسی کے باعث پانچ اضلاع میں آٹے کاتھیلہ900 روپے جبکہ کوٹہ نہ ملنے والے اضلاع میں 1100 روپے کاتھیلہ فروخت ہوگا جونہ صرف فلورملزمالکان کااستحصال ہوگابلکہ اس علاقہ کی عوام کیساتھ زیادتی ہوگی انہوں نے کہاکہ اگرحکومت نے اپنی پالیسی تبدیل نہ کی توپورے پاکستان کی فلور ملیں بندکرکے حکومت سے گندم لینے کابائیکاٹ کرینگے فلورملوں کی تالہ بندی کے علاوہ دھرنے بھی دیں گے اوراس بحران کی ذمہ دارحکومت ہوگی۔

تیار

مزید :

ملتان صفحہ آخر -