وہاڑی، آکسیجن کی عدم دستیابی پر ہلاکتیں غمزدہ خاندان ہسپتال انتظامیہ پر برہم

  وہاڑی، آکسیجن کی عدم دستیابی پر ہلاکتیں غمزدہ خاندان ہسپتال انتظامیہ پر ...

  

وہاڑی(بیورورپورٹ،نامہ نگار)ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں آکسیجن نہ ملنے پر ہلاکتوں کا معاملہ،بورے والا کے رہائشی ملک فاروق اور انور اسلم صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے ہسپتال انتظامیہ پر برس پڑے انہوں نے کہا کہ ان کی مریضہ فوری آکسیجن نہ ملنے کی (بقیہ نمبر5صفحہ6پر)

وجہ جان کی بازی ہار گئی گذشتہ منگل کی شب میری بہن 44سالہ عابدہ انور کی طبیعیت خراب ہونے پر ٹی ایچ کیو ہسپتال بوریوالا سے ڈی ایچ کیو ہسپتال یہ کہہ کر ریفر کیا گیا کہ انہیں فوری آکیسجن اور وینٹی لیٹر کی ضرورت ہے وہاڑی لے جاو ہم ایمبولینس پر ڈی ایچ کیو ہسپتال پہنچے ہمارے مریض کو آکسیجن لگی ہوئی تھی ایمرجنسی میں موجود ڈاکٹر نے کہا کہ انہیں کرونا ہے آئسولیشن وارڈ لے جاو وہاں گئے تو ڈاکٹر علیم نے کہا کہ ایمرجنسی لے جاو مریض کو کرونا نہیں ہے ہم واپس آگئے لیکن ہمیں پھر اوپر نیچے بھیجا گیا اور کہا گیا کہ ہسپتال میں آکسیجن دستیاب نہیں انہیں ملتان لے جاو ہم نے جب احتجاج کیاکہ ہمارا وقت ضائع کیوں کیا پہلے ہی بتا دیتے تو مریض کو ایڈمٹ کر کے آکسیجن لگا دی گئی لیکن ہسپتال کے سلنڈر میں آکیسجن تھی یا نہیں فوری ہمارے مریض کی حالت بگڑ گئی اور دم توڑ گئی ملک فاروق نے کہا کہ ہم نے ایم ایس سے بھی رابطہ کیا تھا لیکن پھر بھی ہمیں ذلیل خوار کیا گیا مریض کی حالت ٹی ایچ کیو میں اتنی خراب نہ تھی جتنی ڈی ایچ کیو ہسپتال میں آکر ہوگئی انہوں نے کہا کہ ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں کرونا کے نام پر مریضوں اور ان کے ورثا سے انتہائی ناروا سلوک کیا جاتا ہے مریض کو فوری ایڈمٹ اور ابتدائی طبی امداد دینے کی بجائے ورثا کو اتنا ٹنگ کیا جاتا ہے کہ وہ مریض کو ڈی ایچ کیو سے لے جانے پر مجبور ہو جاتے ہیں اگر ڈی ایچ کیو ہسپتال میں بروقت آکسیجن اور آج ملتا تو ان کی بہن بچ سکتی تھی انہوں نے وزیراعظم، وزیر اعلی پنجاب سے فوری مطالبہ کیا کہ شفاف تحقیقات کرائی جائے آکسیجن کی عدم دستیابی کا بہانہ کرنے والے ڈاکٹر اور مریضوں کو خوار کرنے والے عملہ کے خلاف سخت کاروائی کی جائے

برہم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -